ایران کی ہاروسٹر بحری جہاز تیار کرنے والے ممالک میں شمولیت

رشت، ارنا- ایرانی وزارت دفاع کے سربراہ برائے سمندری صنعت کے امور نے کہا ہے کہ ملکی ماہرین، اندروں ملک ہی میں "بلیو لیوینڈر" نامی ہاروسٹر بحری جہاز تیار کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

ان خیالات کا اظہار ایڈمیرل "امیر رستگاری" نے آج بروز بدھ کو "بلیو لیوینڈر" ہاروسٹر بحری جہاز کی رونمائی تقریب کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم ملکی ماہرین کی انتھک کوششوں سمیت اپنی طاقت کا استعمال کرکے، شہید تمجیدی میرین انڈسٹریز اور محکمہ دفاع کی میرین انڈسٹریز کے زیر اہتمام میں تیار کرنے پہلی ہاروسٹر بحری جہاز کا باضابطہ نفاذ کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

ایڈمیرل رستگاری نے کہا کہ اس ہاروسٹر کی تعمیر کا دورانیہ 6 مہینے تھا اور اس حوالے سے 12 ہزار 500 افراد سرگرم عمل تھے اور اس کیلئے ایک ہزار 500 ایگزیکٹو سرگرمیوں کا تعارف کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس ہاروسٹر بحری جہاز کی تعمیر سے ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 60 فیصد کی بچت ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ 5 علم پر مبنی کمپنیوں نے اس ہاروسٹر جہاز کی تعمیر میں ایرانی محکمہ دفاع سے تعاون کیا ہے۔

ایرانی وزارت دفاع کے سربراہ برائے سمندری صنعت کے امور نے کہا کہ اس پروڈکٹ کے تمام پرزوں کو اندروں ملک ہی میں تیار کیا گیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 12 =