ایران اور چین کی جامع دستاویز پر دستخط کرنے سے امریکی پابندیاں ختم ہوجائیں گی

اسلام آباد، ارنا - پاکستان انسٹی ٹیوٹ فار پیس اینڈ ڈپلومیٹک امور کے ڈائریکٹر نے بیجنگ کو قابل اعتماد شراکت دار قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایران اور چین کے مابین تعاون تعاون کی جامع دستاویز پر دستخط کرنا امریکی پابندیوں کو غیر موثر اور ایران پاکستان چین تعلقات کو مضبوط بنائے گا۔

ان خیالات کا اظہار "محمد آصف نور" نے اسلام آباد میں ارنا کے  نمائندے کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف یکطرفہ پابندیوں کے بعد ، واشنگٹن نے ملک کی معاشی ترقی میں مشکلات پیدا کردی ہیں ، لیکن تہران اور بیجنگ کی یکجہتی سے امریکی پابندیاں غیر موثر ہوجائیں گی۔

اس پاکستانی ماہر نے علاقائی روابط کی اہمیت اور سہ فریقی تعاون کے قیام میں ایران ، چین اور پاکستان کی پوزیشن پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران چین کی اسٹریٹجک دستاویز ایک اہم کامیابی ہے جس سے ان دونوں ممالک کے ساتھ پاکستان کے تعاون میں اضافہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین سفارتی تعلقات کے قیام کی 50 ویں سالگرہ کے موقع پر ہی ایران اور چین  کے تعاون سے متعلق جامع دستاویز پر دستخط کیے گئے اور اس دستاویز پر دستخط کرنے سے عالمی اقتصادی طاقت (چین) کے ساتھ ایران کے اسٹریٹجک تعلقات میں اضافہ ہوگا۔

محمد آصف نور نے کہا کہ جوہری معاہدے سے  ٹرمپ کے دستبرداری اور ایران مخالف پابندیاں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے ایک جامع دستاویز پر دستخط کرکے ایک اہم اقدام اٹھایا۔

انہوں نے کہا کہ جامع دستاویز پر دستخط  کوایران ، چین اور پاکستان کے مابین سہ فریقی تعاون کو فروغ دینے کا باعث قرار دیتے ہوئے کہا کہ چین کے ساتھ پاکستان کی تجارت فی الحال سی پیک راہداری کے ذریعے کی جارہی ہے جو مستقبل میں ایران تک بڑھایا جاسکتا ہے۔

آصف نور نے کہا کہ توقع کی جارہی ہے کہ تہران اور اسلام آباد کے مابین مشترکہ تعلقات کی وجہ سے جامع دستاویز پر دستخط کرنے کے بعد دونوں ممالک کے مابین تعلقات مضبوط ہوں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =