ایران دنیا کا اسٹیل تیار کرنے اور برآمد کرنے والا ملک بن گیا ہے

تہران، ارنا- ایرانی وزیر برائے صنعت، تجارت اور کان کنی نے کہا ہے کہ گزشتہ عرصے کے دوران ہم اسٹیل کی درآمد کرتے تھے تا ہم اب ایران، دنیا میں اسٹیل تیار کرنے اور برآمد کرنے کے بڑے ملکوں میں شامل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کو دنیا میں اسٹیل کی پیداواری کے شعبے میں گیارہویں پوزیشن حاصل ہے۔

ان خیالات کا اظہار "علیرضا رزم حسینی" نے آج بروز جمعرات کو ملک میں 5 اہم صنعتی منصوبوں کی افتتاحی تقریب کے موقع پر ویڈیو کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

ایرانی وزیر برائے صنعت، تجارت اور کان کنی کے امور نے کہا کہ ان منصوبوں پر مجموعی طور پر 4 ہزار 530 ارب تومان (ایرانی قومی کرنسی) کی سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج کے پہلے نفاذ کیے گئے منصوبے کا تعلق صوبے شمالی خراسان میں واقع اسفراین فیکٹری میں خاص مصر دات اسپات کی تیاری ہے جس کی نئی پیداواری لائن کا قیام ہوگیا ہے۔

زرم حسینی نے کہا کہ یہ خصوصی اسٹیل ملک کی آئل اینڈ گیس کمپنی کی صنعتوں میں بغیر کسی رکاوٹ کے پائپوں کے لئے استعمال ہوتے ہیں۔

‌انہوں نے کہا کہ آج صوبے قزوین میں بھی نجی شعبے سے متعلق ایک تانبے کے کان کا بھی نفاذ ہوجائے گا؛ آج، نجی شعبہ آہستہ آہستہ تانبے کے میدان میں داخل ہوگیا ہے، جس میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کی بھی ضرورت ہے، جبکہ اسلامی انقلاب سے پہلے اس شعبے میں ہماری پیداوار صفر تھی، آج یہ 400 ہزار ٹن تک پہنچ چکی ہے؛ یہاں تک کہ دنیا کے تانبے کے برآمد کنندہ بھی ہیں۔

‌ایرانی وزیر نے کہا کہ لوہے کی کانوں کے میدان میں ہمارے پاس گول گوہر پروجیکٹ بھی ہے، جو سانگن فیڈ کی پری پراسیسنگ کے لئے ایک بہت اہم منصوبہ ہے اور یہ کہا جاسکتا ہے کہ آج گول گوہر جنوبی پارس فیلڈ بن چکے ہیں اور ہمارے پاس اس شعبے میں سرمایہ کاری کی بہت صلاحیتیں ہیں۔

واضح رہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر مملکت کی ہدایت اور وزیر برائے تجارت، صنعت اور کان کنی کے امور کی شرکت سے آج بروز جمعرات کو ویڈیو کانفرنس کے ذریعے 5 اہم صنعتی منصوبوں کا نفاذ کیا گیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha