امریکہ ایران جوہری معاہدے میں واپسی اور پابندیوں کے خاتمے پر مجبور ہے

تہران، ارنا- سنئیر نائب ایرانی صدر نے کہا ہے کہ امریکیوں کو پتہ چل گیا ہے کہ زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی پالیسی کو شکست کا سامنا ہوا ہے اور وہ ایران جوہری معاہدے میں واپسی اور پابندیوں کے خاتمے پر مجبور ہے۔

ان خیالات کا اظہار "اسحاق جہانگیری" نے آج بروز منگل کو اسلامشہر میں ایک ڈیری پروڈکٹ فیکٹری کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ پیداوار کے فروغ کی پالیسی کو اپناتے ہوئے ہماری معیشت کی صورتحال مزید بہتر ہوگئی ہے جبکہ امریکیوں نے بھی کھلی طور پر ایران کیخلاف زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی پالیسی کی شکست پر اعتراف کیا ہے۔

جہانگیری نے کہا کہ امریکہ، جوہری معاہدے میں واپسی اور پابندیوں کے خاتمے پر مجبور ہے؛ ہمیں ملک کے اندر پیداوار کے فروغ کی مناسب فضا کی فراہمی سے پرڈیوسروں کی حمایت کرنی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ایران کیخلاف امریکی معاشی جنگ کی وجہ سے ایران میں 2 ہزار 500 مختلف مضنوعات کی درآمد پر پابندی عائد ہوئی؛ لیکن ہمارے پرڈیوسروں نے اس موقع سے فائدہ اٹھا کر خود ان مصنوعات کو اندرون ملک ہی میں تیار کی۔

نائب ایرانی صدر نے کہا کہ ایران میں بینکنگ سسٹم پیداوار اور معیشت کی بنیادی حمایت کرتی ہے اور ایران کی معیشت بینک پر مبنی ہے اور بینک سہولیات کے سلسلے میں کپٹل مارکیٹ کا حصہ کم ہے لہذا؛ بینکوں کے لئے فنڈ اکٹھا کرنے اور انہیں پیداواری کاروباری اداروں کو فراہم کرنے کیلئے ضروری اقدامات اٹھانے ہوں گے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 13 =