ایران اور چین کے مابین تعلقات مضبوط سے مضبوط تر ہوجائیں گے: ظریف

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور چین کے مابین تعاون کے جامع پروگرام کے روڈ میپ پر دستخط کرنے سے دونوں ممالک کے مابین تعلقات مضبوط سے مضبوط تر ہوجائیں گے۔

یہ بات محمد جواد ظریف نے آج بروز ہفتہ اپنے چینی ہم منصب 'وانگ ایی' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے مزید کہا کہ  ایران اور چین کے مابین تعلقات مضبوط سے مضبوط تر ہوتے جارہے ہیں۔

 فریقین نے اس ملاقات کے دوران دوطرفہ ، علاقائی اور بین الاقوامی تعلقات کے اہم امور پر تبادلہ خیال کیا۔

انہوں نے چینی وزیر خارجہ کو خوش آمدید کہنے کے ساتھ ساتھ ایران اور چین کے مابین سفارتی تعلقات کے قیام کی 50 ویں سالگرہ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور چین کی دو عظیم تہذیبوں کے مابین تعلقات کی تاریخ صدیوں پہلے سے متعلق ہے اور ایران اور چین کے مابین تعاون کے جامع پروگرام کے روڈ میپ پر دستخط کرنے سے دونوں ممالک کے مابین تعلقات مضبوط سے مضبوط تر ہوجائیں گے۔

ظریف نے چین کو مشکل وقت کا دوست قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسی بنا پر ،ہم ایران کے خلاف جابرانہ پابندیوں کے دوران چین کے موقف اور اقدامات کی تعریف کرتے ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ نےامریکہ کی جانب سے اپنے جوہری وعدوں پر عمل کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران کے خلاف پابندیاں اٹھانا جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ کی راہ کو ہموار کرسکتا ہے۔

ظریف نے بیجنگ میں 2022 کے سرمائی اولمپکس کو ایک اہم ایونٹ قرار دیتے ہوئے اس بین الاقوامی ایونٹ کی اہمیت کو کم کرنے کیلیے سیاسی کوششوں کو مسترد کردیا۔

 اس ملاقات کے دوران چینی وزیر خارجہ نے عید نوروز اور نئے ایرانی سال  کی آمد کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین تعلقات اب اسٹریٹجک شراکت کی سطح پر پہنچ چکے ہیں اور چین اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات کو مکمل طور پر بہتر بنانا چاہتا ہے۔

چینی وزیر خارجہ نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین اسٹریٹجک تعاون کے روڈ میپ پر دستخط کرنا اعلی ترین سطح پر تعلقات کے فروغ کیلیے بیجنگ کے عزم کی علامت ہے۔

 ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 4 =