ایران کیخلاف یکطرفہ پابندیاں معاشی دہشت گردی کی واضح مثال ہیں: ایرانی اسپیکر

تہران، ارنا - پارلیمنٹ کے اسپیکر نے ایرانی عوام کے خلاف یکطرفہ پابندیوں کو معاشی دہشت گردی کی واضح مثال قرار دیا۔

یہ بات محمد باقر قالیباف نے  جمعرات کے روز ترکی کے شہر انتالیا میں انسداد دہشت گردی اور 6 ممالک کے پارلیمنٹس کے اسپیکرز کے علاقائی تعلقات کو مضبوط بنانے سے متعلق چوتھی کانفرنس میں کہی۔

اس کانفرنس میں اسلامی جمہوریہ ایران،چین ، اسلامی جمہوریہ افغانستان، جمہوریہ عراق ، اسلامی جمہوریہ پاکستان ، روسی فیڈریشن اور جمہوریہ ترکی کے وفود کی شرکت کے ساتھ منعقد ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹس حکومتوں کے اقدامات کی تکمیل اور اقوام عالم کے مابین فائدہ مند تعلقات کو مضبوط بنانے، انتہا پسندی کے پھیلاؤ اور دہشت گردی کے خلاف جنگ کو روکنے میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں۔

قالیباف نے سب سے پہلے اس اہم اجلاس کے انعقاد کے لئے  جمہوریہ ترکی کی قومی اسمبلی کے اسپیکر ڈاکٹر مصطفی شنتوپ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ مجھے امید ہے کہ یہ ملاقات خطے کے ممالک کے مابین یکجہتی کے لئے ایک اچھا موقع فراہم کرسکے گی ہے۔

قالیباف نے بتایا کہ کوویڈ 19 کی طرح دہشت گردی بھی معصوم اور بے گناہ لوگوں کی جان لینے کی کوئی حد نہیں جانتی ہے۔

ایرانی اسپیکر نے بتایا کہ کچھ ممالک خاص طور پر امریکہ اور غاصب صہیونی ریاست دہشت گردی کو اپنے اہداف کے حصول کے لئے ایک آلے کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ایرانی عوام پر یکطرفہ پابندیوں کو عائد کرنا اقتصادی دہشت گردی کی واضح مثال ہے۔

ڈاکٹر قالیباف نے کہا کہ ایران خطے سے غیر ملکی افواج کے انخلا کا خواہاں ہے۔

انہوں نے۔ کہا کہ دہشت گردی کی شکست کو خطرہ میں تمام ممالک کے ایک جامع منصوبے کی ضرورت ہے

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha