ایران اور سربیا کا کان کنی اور توانائی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ پر زور

بلغراد، ارنا- سربیا کی خاتون وزیر برائے توانائی اور کان کنی کے امور نے بلغراد میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر سے ایک ملاقات کے دوران، دونوں ملکوں کے درمیان اچھے تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کان کنی اور توانائی کے شعبوں میں تعاون کے فروغ پر زور دیا۔

ان خیالات کا اظہار "زورانا میخایلوویچ" نے "رشید حسن پور" کیساتھ ایک ملاقات کے دوران، گفتگو کرتے ہوئے کیا اور سربیا کی حکومت سے تعمیری تعاون اور باہمی تعلقات کے فروغ پر ایرانی سفیر کی کوششوں کا شکریہ ادا کیا۔

سربیا کی خاتون وزیر نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین تجارت اور اقتصادی تعاون کیلئے مشترکہ کمیشن کے دائرہ کار میں کان کنی اور توانائی سے متعلق ایک ذیلی کمیٹی کا وجود، خاص طور پر کان کنی اور توانائی کے شعبے میں باہمی تعاون بڑھانے کیلئے اہم ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایران کی کان کنی اور توانائی کے شعبوں میں بہت ساری صلاحتیں ہیں اور سربیا ان شعبوں میں ایران سے موثر اور پائیدار تعاون کا خواہاں ہے۔

میخایلوویچ نے دیگر ملکوں کی قومی سالمیت اور خودمختاری کے تحفظ پر ایران کے تعمیری موقف کو سراہتے ہوئے اس امید کا اظہار کردیا کہ ایران کیخلاف پابندیوں کی منسوخی سے دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون کے مزید مواقع فراہم ہوں گے۔

در این اثنا ایرانی سفیر نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، سربیا سے مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے کیلئے پُرعزم ہے۔

حسن پور نے کہا کہ ایران اور سربیا نے مشترکہ اقتصادی کمیشن کے دائرہ کار میں ان شعبوں میں کان کنی اور توانائی کے شعبوں میں ایک کمیٹی کے قیام پر اتفاق کیا ہے اور ہمیں امید ہے کہ مشترکہ کاشوں سے اس کا جلد از جلد نفاذ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے سربیا کیساتھ توانائی کے وسائل کو متنوع بنانے کیلئے تعاون کا خیرمقدم کیا ہے اور دونوں ممالک نے پابندیوں کے باوجود تعاون کی بحالی اور ترقی کی حمایت کی کوشش کی ہے۔

 **9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 1 =