ایرانی فوٹوگرافر کے نقطہ نظر سے جاپان سونامی کی نمائش کا ٹوکیو میں انعقاد ہوگا

تہران، ارنا- جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی (جے آئی سی اے) کے زیر اہتمام میں سونامی کی برسی کے موقع پر لگاتار دس سالوں کے دوران، اس حادثے سے متعلق نمائش کا انقعاد کیا جاتا ہے اور اس سال اس حوالے سے ایرانی فوٹوگرافر "افشین ولی نژاد" کی کھینچی گئی تصویروں کی نمائش کا ٹوکیو میں انعقاد ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق، اس تصویری نمائش کا 11 مارس؛ مطابق سونامی حادثے کی گیارہویں برسی کے موقع پر دو ہفتوں کیلئے ٹوکیو میں انعقاد کیا جاتا ہے۔

ولی نژاد نے اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پہلی بار 2011ء اور سونامی کے 7 مہینے گزرنے کے بعد، جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی کی مرحوم خاتون سربراہ "ساداکو" کی دعوت سے اس حادثے سے متعلق ان کی بنائی گئی تصویروں کی نمائش کا انعقاد کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ پھر ہر سال ایک روزہ کانفرنس میں ایک تصویری نمائش کے انعقاد اور جے آئی سی اے کے ایک عہدیدار اور ان کے ایک تقریر کے بعد، سونامی تباہی سے متعلق ان کی بنائی گئی مختصر فلم کو پیش کیا گیا تھا۔

ولی نژاد نے کہا کہ میں رواں سال کے دوران، جاپان میں نہیں ہوں تا ہم یہ تصویری نمائش "ایک ایرانی فوٹوگرافر کے نقطہ نظر سے سونامی کا نشان" کے عنوان کے تحت منعقد ہوگی۔

 واضح رہے کہ سن 2011 میں مشرق بعید میں انتہائی شدید زلزلہ آیا تھا۔ اس زلزلے کے نتیجے زیر سمندر سونامی نے جنم لیا اور جب وہ ساحلوں سے ٹکرائی، تو کئی ممالک میں ہزاروں انسان ہلاک ہو گئے تھے۔

گیارہ مارچ سن 2011 میں جو زلزلہ آیا تھا، اس کی شدت ریکٹر اسکیل پر نو ریکارڈ کی گئی تھی؛ اس زلزلے کے نتیجے میں سونامی نے جاپان کے شمال مشرقی حصے کی بعض ساحلی علاقوں کو پوری طرح تاراج کر دیا تھا۔ اس سونامی کی لپیٹ میں آکر اٹھارہ ہزار انسانی جانیں ضائع ہوئی تھیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha