جوہری معاہدے میں امریکی واپسی کا واحد راستہ ساری پابندیوں کی منسوخی ہے: عراقچی

تہران، ارنا- نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور نے کہا ہے کہ اگر امریکہ، جوہری معاہدے میں از سرنوشمولیت کیلئے واقعی سنجیدہ ہے تو اس کا سیدھا حل ہے؛ جوہری معاہدے میں واپس آئے اور ایران کیخلاف پابندیوں کا خاتمہ دے۔

ان خیالات کا اظہار سید عباس عراقچی نے آج بروز اتوار کو ایران کے دورے پر آئے ہوئے ناروے کی خاتون نمائندہ برائے شام اور عراق کے امور "ہراالدستاد" کیساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس ملاقات میں دونوں فریقین نے عراق اور شام کی تازہ ترین تبدیلیوں کا جائزہ لیتے ہوئے علاقے میں عدم استحکام پھیلانے والے عناصر بالخصوص دہشتگرد گروہوں کیخلاف مقابلہ پر تبادلہ خیال کیا۔

اس موقع پر عراقچی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک علاقائی اور بین الاقوامی مسائل میں ناروے سے تعاون کا سلسلہ جاری رکھنے کیلئے پُر عزم ہے۔

انہوں نے کہا کہ علاقے میں قیام امن اور استحکام، اسلامی جمہوریہ ایران کیلئے انتہائی اہم ہے اور ہم اس حوالے سے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کریں گے اور ایران نے شام اور عراق کی خواست سے ان دونوں ممالک میں داعش کیخلاف لڑںے میں تعمیری کردار ادا کیا ہے۔

عراقچی نے ایران جوہری معاہدے کو مغربی ایشیا کی سب سے بڑی سفارتی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر امریکہ، ایران جوہری معاہدے میں از سرنوشمولیت کیلئے واقعی سنجیدہ ہے تو اس کا سیدھا حل ہے؛ جوہری معاہدے میں واپس آئے اور ایران کیخلاف پابندیوں کا خاتمہ دے تو اس وقت اسلامی جمہوریہ ایران بھی اپنے جوہری وعدوں پر پورا اترے گا۔

دراین اثنا ناروے کی خاتون نمائندے برائے شام اور عراق کے امور نے علاقے میں ناروے کے انسان دوستانہ اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے علاقائی معاملات میں ایران سے باہمی مشاورت اور سیاسی مذاکرات کا سلسلہ جاری رکھنے میں دلچسبی کا اظہار کردیا.

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 6 =