جوہری معاہدے کے تمام ممبروں کو قرارداد 2231 پر مکمل عمل درآمد کرنا ہوگا: صدر روحانی

تہران، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران وہ واحد ملک ہے جس نے اس معاہدے کے بچانے کی قیمت ادا کی ہے لیکن یہ صورتحال اس طرح جاری نہیں رہ سکتی ہے اور جوہری معاہدے کو برقرار رکھنے اور اس کی بحالی کے لئے تمام ممبران کو قرارداد 2231 پر مکمل عمل درآمد کرنا ہوگا۔

یہ بات حسن روحانی نے اتوار کے روز آئر لینڈ کے وزیر خارجہ سایمون کاوونی  کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگوکرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ علاقائی بحرانوں کے حل کے لئے بین الاقوامی اداروں کے ساتھ تعاون کے لئے ایران کی تیاری کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ باہمی ، علاقائی اور بین الاقوامی سطحوں پر یورپی شراکت داروں کے ساتھ مسائل حل کرنے کا بہترین طریقہ باہمی احترام کی بنیاد پر بات چیت کرنا اور کسی بھی خطرے یا دباؤ سے بچنا ہے۔ 

ایرانی صدر نے غیر قانونی پابندیوں اور ایرانی عوام پر زیادہ سے زیادہ امریکی دباؤ کی ناکامی اور اس مسئلے پر نئی امریکی انتظامیہ کے اعتراف کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ کثیرالجہتی بین الاقوامی معاہدے کے طور پر جوہری معاہدے کی شرط امریکہ کی جانب سے پابندیوں کو ختم کرنے اور تمام ممبروں کی مکمل ذمہ داریوں کو پورا کرنا ہے۔

انہوں نے جوہری وعدوں پر یورپ کی بے علمی کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے کے نفاذ کے لئے پرعزم ہے اور وہ واحد ملک ہے جس نے اس کی قیمت ادا کی ہے  لیکن یہ صورتحال اس طرح جاری نہیں رہ سکتی  ہے اور اس معاہدے کی بحالی کے لئے اس معاہدے کے تمام فریقین کو قرارداد2231 پر مکمل عمل درآمد  کرنا چاہیے۔

روحانی نے کہا کہ اسلامی مشاورتی اسمبلی کی قرارداد پر مبنی ایڈیشنل پروٹوکول پر عمل درآمد معطل کرنے کے لیے ایران کے اقدام کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اضافی پروٹوکول پر عمل درآمد معطل ہونے کے باوجود ایران اب بھی بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے ساتھ تعاون کرنے کے لئے پرعزم ہے۔

ایران آمادہ ہے کہ غیر قانونی امریکی پابندیاں اٹھانے اور دھمکیوں اور دباؤ کی پالیسی کے خاتمے کے بعد فوری طور پر جوہری معاہدے کی دفعات کے تحت اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرے۔

روحانی نے دونوں ممالک کے مابین تعلقات کو تمام شعبوں خصوصا معاشی اور تجارتی تعلقات کو گہرے بنانے پرزور دیتےہوئے کہا کہ دونوں ممالک میں تمام شعبوں میں بہت زیادہ صلاحیتیں ہیں جو ہمیں اسے استعمال کرنے کی کوشش کرنی ہوگی۔

٭٭نئی امریکی انتظامیہ جوہری معاہدے میں واپس آنے کا عزم رکھتی ہے

اس موقع پر آئرلینڈ کے وزیر خارجہ نے کہا کہ جوہری معاہدے سے ٹرمپ کا دستبرداری ایک تاریخی غلطی تھی اور نئی امریکی حکومت جوہری معاہدے میں واپسی پر دلچسبی رکھتی ہے۔

انہوں نے امن کے ایک بین الاقوامی معاہدے کی حیثیت سے اس معاہدے کی  اہمیت کا حوالہ دیتے  دیتے ہوئے کہا کہ ہم اس سمجھوتے کو برقرار رکھنے کے لئے اپنی پوری کوشش کریں گے اور ہم اس صورتحال کو بہتر بنانے اور معاہدے کے تمام ممبروں کے مذاکرات کو دوبارہ شروع کرنے کی مدد کے لئے اپنی تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لائیں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha