عالمی جوہری توانائی ایجنسی سیاسی کھیلوں کی جگہ نہیں ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا – ایرانی صدر مملکت نے اس بات پر زور دیا ہے کہ عالمی جوہری توانائی ایجنسی سیاسی کھیلوں کی جگہ نہیں ہے اور جوہری معاہدہ ایک واحد سمجھوتہ ہے جس پر مذاکرات نہیں کریں گے۔

یہ بات "حسن روحانی" نے جمعرات کے روز وزارت داخلہ کے منصوبوں کی آن لائن افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ہم ابتدا سے عالمی ایٹمی توانائی ایجنسی کے ساتھ باہمی تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں اور وہ جانتی ہے کہ ہم نے اس دوران اچھی طرح تعاون کیا ہے۔

عالمی ایٹمی توانائی ایجنسی کو ایران کیساتھ اپنے دوستانہ تعلقات کو خراب ہونے کی اجازت نہیں دینی چاہئے
صدر روحانی نے ایجنسی کی رپورٹوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہمارے ساتھ دوستی کا دعوی کرنے والے یورپی ممالک ان دنوں ایجنسی میں ، آج اور کل ایران کے خلاف قرارداد مسودہ جاری کرنے کے پیچھے تلاش کر رہے ہیں اور ہم انہیں مشورہ دیتے ہیں کہ ایسا نہ کریں۔
انہوں نے کہا کہ ہم عالمی جوہری توانائی ایجنسی کو بھی مشورہ دیتے ہیں کہ وہ ان اچھے تعلقات کو تباہ کرنے کی اجازت نہ دیں جو ہمارے ساتھ جکڑے ہوئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ یورپی ٹرویکا سے اس معاملے کو روکنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ ایجنسی ایک تکنیکی جگہ ہے ، لہذا آئیے اس ایجنسی کے ساتھ اپنے تکنیکی کام کو بخوبی جاری رکھیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدہ ایک متن اور ایک معاہدہ ہے ، ہم اس معاہدے میں کوئی نئی بات چیت نہیں کریں گے۔ معاہدہ ختم ہوچکا ہے اور کسی چیز کو کم یا بڑھایا نہیں جاسکتا۔
 روحانی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی جوہری سرگرمیاں 100 فیصد پرامن ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی آرام سے اس کی نگرانی کرے۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ نے ایران کو براہ راست 200 ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان پہنچایا ہے۔ ہم ان لوگوں سے مطالبہ کرتے ہيں جو دعوی کرتے ہیں کہ وہ سفارتکاری کے ذریعے مسائل حل کرنا چاہتے ہیں ، مواقع سے محروم نہیں رہیں۔ ہم واضح طور پر کہتے ہیں کہ وقت ضائع کرنا کبھی کسی کے مفاد میں نہیں ہوتا اور اگر تاخیر ہوتی ہے تو اس کی فوری ذمہ داری امریکہ کی ہے ایران کی نہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ آپ نے یہ پابندی ختم کردی ، تاکہ سفارت کاری اور مذاکرات کا آغاز ہو اور ہم ترقی کرسکیں۔ اس سے قبل ایران نے پابندی ختم ہونے کے بعد اپنے وعدوں پر واپس آنے پر آمادگی کا اعلان کیا ہے، امید ہے کہ آنے والے دنوں اور ہفتوں میں ہم ایرانی عوام کے لئے بہتر حالات دیکھیں گے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 5 =