امریکہ کیلئے جوہری معاہدے پر واپس جانے کا آسان طریقہ وعدوں پر عملدرآمد کرنا ہے: ایران

نیویارک، ارنا - اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل مندوب نے موجودہ امریکی انتظامیہ کو قرارداد 2231 اور جوہری معاہدے کی خلاف ورزی جاری رکھنے والی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کیلئے جوہری معاہدے پر واپس جانے کا آسان طریقہ اپنی ذمہ داریوں کا مکمل نفاذ ہے۔

یہ بات "مجید تخت روانچی" نے اتوار کے روز الجیریا نیوز چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے امریکہ کی جوہری معاہدے سے علیحدگی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بائیڈن انتظامیہ نے متعدد مواقع پراعلان کردیا کہ امریکہ جوہری معاہدے پر واپس ہوگا لیکن ابھی تک ہم نے جوہری معاہدے پر امریکی پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں دیکھی ہے۔
تخت روانچی نے کہا کہ یہ امریکی حکومت پر منحصر ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ کی سمت میں آگے بڑھے یا ایک نیا باب کھولے اس وجہ سے ہم کتنا پرامید یا مایوس کن ہیں یہ نہیں کہہ سکتے کہ وہ کون سا راستہ چنتا ہے، بنیادی طور پر ہمیں عمل میں پالیسی میں تبدیلی دیکھنی ہوگی، صرف اپنے پوزیشن کی وضاحت سے ایران اور بین الاقوامی برادری مطمئن نہیں ہوگی۔
اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل نمائندے نے کہا کہ ہمارے خیال میں امریکی وعدوں پر عمل درآمد کے لئے مذاکرات کرنے کی ضرورت نہیں ہے، یہ فیصلہ کرنا امریکہ پر منحصر ہے کہ آیا اپنے وعدوں پر پورا اترنا چاہتا ہے، امریکہ کو لازمی فیصلے کرنا چاہیئے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha