ایران اور یوریشیا کے درمیان 30 ارب ڈالر کی تجارتی صلاحیت

تہران، ارنا- ایرانی تجارتی ترقیاتی تنظیم کے سربراہ برائے یورپ اور امریکہ کے امور نے کہا ہے کہ یوریشین معاشی یونین کیساتھ ایران کے آزاد تجارتی معاہدے کے نفاذ کیساتھ ہی، مختلف اشیا کے ٹیرف صفر یا صفر کے قریب ہوں گے۔

ان خیالات کا اظہار "بہروز الفت" نے آج بروز بدھ کو ایران میں یوریشیا کی پہلی خصوصی نمائش کے انعقاد سے متعلق منعقدہ اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے ایران اور یوریشین یونین کے درمیان تجارتی معاہدے پر مذاکرات کے عمل میں ہونے والی پیشرفتوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ نئے مذاکرات کا فروری سے آغاز ہوچکے ہیں۔

الفت نے ایران اور یوریشیا کے درمیان 30 ارب ڈالر کی مالیت پر تجارتی صلاحیتوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ تعلقات کے عدم فروغ کی ایک وجہ دیگر ملکوں کے بازاروں کی عدم شناخت ہے اور اسی وجہ سے ایران میں یوریشیا کی خصوصی نمائش کا 18 سے 20 مئی تک انعقاد کیا جائے گا۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ اس نمائش کے انعقاد سے نقل و حمل کے شعبوں کے مسائل کے حل سمیت، اندروں ملک اور بیرون ملک میں مزید سرمایہ کار، ملک میں سرمایہ کاری کرنے پر راغب ہوں گے۔

واضح رہے کہ فی الحال، روس، بیلاروس، قازقستان، آرمینیا اور کرغزستان یوریشین یونین کے پانچ ممبر ہیں اور انہوں نے 2015ء سے اپنی تجارتی سرگرمیوں کا آغاز کیا ہے؛ اس یونین نے 40 سے زیادہ ممالک اور بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ کام کرنے کیلئے اپنی آمادگی کا اظہار کرلیا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =