فلم اور سیریل کی پروڈکشن ، ایران اور پاکستان کے ثقافتی مشترکات کی وضاحت کی گنجائش ہے

اسلام آباد، ارنا - "لاہور" میں اسلامی جمہوریہ ایران کے ہاؤس آف کلچر کے سربراہ نے تاریخی فلموں اور سیریلز کی تیاری میں ہمارے ملک کی اچھی صلاحیتوں کی وضاحت کرتے ہوئے کہاہے کہ فلموں اور سیریلز کا تبادلہ دونوں ممالک کی نوجوان نسل کو ایک دوسرے کی ثقافت ، معاشرے اور رسوم و رواج سے واقف کرسکتا ہے۔

یہ بات جعفر روناس نے بدھ کے روز پنجاب انسٹیٹیوٹ لینگوئج آرٹ اینڈ کلچر کی ڈائریکٹر ڈاکٹر  'صغرا صدف' کے ساتھ دونوں ممالک کے درمیان ثقافتی تعلقات کے فروغ پر گفتگو کرتے ہو‏ئے کہی۔

انہوں نے ایران کے ہاؤس آف کلچر  اور پنجاب انسٹیٹیوٹ لینگوئج آرٹ اینڈ کلچر  کے درمیان ثقافتی تعلقات سمیت مختلف شعبوں میں باہمی تعاون پر زور دیا۔

معروف پاکستانی شاعرہ، محقق اور کالم نگار ڈاکٹر صغرا صدف نے پاکستانی انسٹیٹیوٹ کی مختلف صلاحیتوں کا حوالہ دیتے ہوئے اس انسٹیٹیوٹ میں ہاؤس آف کلچر کے ذریعہ مختلف ثقافتی پروگراموں کے انعقاد کا خیرمقدم کیا۔

ہمارے ملک کے ہاؤس آف کلچر کے سربراہ نے اسلامی جمہوریہ ایران کی ثقافتی اور فنکارانہ صلاحیتوں کے ساتھ ساتھلاہور میں قائم ہاؤس آف کلچر کے فعال کردار کا ذکر کرتے ہوئے شاعروں 'مولانا روم' کی ورکشاپس ، فارسی زبان کی تعلیم ، اور ثقافتی مشترکات کی نمائش کے انعقاد جیسے ادبی سیشنوں کی میزبانی کرنے کی تیاری کا اعلان کیا۔

تاریخی فلموں اور سیریلوں کی تیاری میں اسلامی جمہوریہ ایران کی عمدہ صلاحیتوں کا ذکر کرتے ہوئےانہوں نے مزید کہاکہ دونوں ممالک کے مابین فلموں اور سیریل کا تبادلہ دونوں ممالک کی نوجوان نسل کو ثقافت، معاشرے اور رسم و رواج پر واقف کرسکتا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha