فارسی زبان کی تعلیم کے فروغ کا پاک ایران تعلقات میں اہم کردار

اسلام آباد، ارنا- پاکستانی عوام، فارسی زبان میں دلچسبی رکھتے ہیں اور مختلف محفلوں میں پارسی گو شعرا بشمول حافظ، سعدی اور اقبال لاہوری کا ذکر کرتے ہیں؛ اس بات کی اہمیت کے پیش نظر پاکستان میں قائم ایرانی سفارتخانے نے فارسی زبان کی تعلیم کے فروغ کیلئے ایک نیا قدم اٹھایا ہے۔

پاکستانی حکام اور عہدیداروں بشمول تعلیمی اداروں اور یونیورسٹیوں کے سربراہوں اور سائنسدانوں نے اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے عوام کو ایک دوسرے سے مزید قریب لانے کیلئے بدستور فارسی زبان اور ادب کی تعلیم کے فروغ پر زور دیا ہے۔

پاکستانی وزیر اعظم "عمران خان" اور صدر مملکت "عارف علوی" نے برصغیر میں فارسی زبان کی عظمت اور اہمیت پر زور دیا ہے۔

عمران خان نے اپنے پہلے دورہ ایران کے موقع پر اس حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگر انگریزی انیسویں صدی میں ہندوستان نہ آتے تو ہمیں مترجم کی ضرورت نہ پڑتی اور ہم سب فارسی بولتے تھے؛ فارسی چھ سو سالوں سے برصغیر کی سرکاری زبان تھی۔

اس کے علاوہ عارف علوی نے گزشتہ سال کے دوران، غیر وابستہ ممالک کی تحریک کے سربراہی اجلاس کے دوران، اپنے ایرانی ہم منصب ڈاکٹر حسن روحانی سے گفتگو کرتے ہوئے فارسی زبان سیکھنے میں بڑی دلچسبی کا اظہار کرلیا۔

در حقیقت، پاکستان کی ایران کیساتھ خاص طور پر ثقافت، تاریخ، مذہب اور معاشرے کے میدان میں بہت سی مشترکات ہیں، لہذا؛ پاکستان میں فارسی زبان کی تعلیم کا فروغ، دونوں کی مشترکہ ثقافت اور تہذیب کو سمجھنے کے لئے ایک موثر اقدام ہے اور دونوں ملکوں کو اس حوالے سے مزید کوششیں کرنی ہوں گی۔

پاکستان میں قائم ایرانی سفارتخانے نے فارسی زبان کی تعلیم کے فروغ میں موثر اقدامات اٹھائے ہیں اور اس کے علاوہ مختلف تقاریب کے انعقاد سے پاکستانی طلبا کی فارسی میں دلچسبی رکھنے میں انتہائی اہم کردار ادا کیا ہے۔

اسی سلسلے میں ایرانی سفارتخانے کے زیر اہتمام میں راولپنڈی میں فارسی زبان و ادب کی تعلیم کی نئی کورس کا رواں ہفتے سے آغاز کیا گیا ہے۔

اسی مناسبت سے ایرانی خانہ فرہنگ میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں پاکستانی پروفیسرز نے فارسی زبان سیکھنے کے فوائد اور برصغیر میں اس زبان کی اہمیت پر تقریریں کیں۔

 اس کے علاوہ ایرانی ثقافتی قونصلر اور پاکستان میں قائم سعدی فاونڈیشن کے سربراہ نے بھی فارسی زبان کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے پاکستان میں اس زبان کی تعلیم کے فروغ میں ہر کسی اقدام اٹھانے پر تیاری کا اظہار کرلیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 1 =