جوہری معاہدہ کثیرالجہتی سفارت کاری کیلئے ایک اہم کامیابی ہے: صدر روحانی

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے عام سیاسی رجحانات کے تعین اور یوروپی یونین کی ترجیحات میں کونسل آف یورپ کے کردار کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہاہے کہ یوروپی یونین، عالمی میدان میں ایک بڑے اداکار کی حیثیت سے امریکی یکطرفہ پن کے مقابلے کے لئے لازمی کردار ادا کرے۔

یہ بات ڈاکٹر حسن روحانی نے گزشتہ روز یورپی یونین کے سربراہ "شارل میشل"  کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے جوہری معاہدے کو کثیرالجہتی سفارت کاری کیلئے ایک اہم کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں اس عظیم کارنامے کو آسانی سے مٹ جانے کی اجازت نہیں دینی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کا سربراہ ، جوہری معاہدے کے کوآرڈینیٹر کی حیثیت سے اقدامات کو ڈیزائن کرنے میں اپنا کردار ادا کرسکتا ہے۔

انہوں نے خطے اور دنیا کے دو اہم مسائل کی حیثیت سے دہشت گردی اور انتہا پسندی سے نمٹنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم دہشت گردی اور انتہا پسندی کا مقابلہ کرنے کے لئے یوروپی یونین کے ساتھ مل کر کام کرنے پر تیار ہیں اور اس سلسلے میں ہم علاقائی باہمی رابطوں اور تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

صدر روحانی نے قاسم سلیمانی کی شہادت کے بعد خطے میں داعش کی بحالی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ  خطے میں غیر ملکی افواج کی موجودگی نے تناؤ میں اضافہ کیا ہے اور خطے میں سلامتی ، امن اور استحکام کے قیام کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

روحانی نے یوروپی یونین کے ساتھ تعلقات خاص کر تجارت اور معیشت کے شعبوں میں  باہمی تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت پر بھی زور دیتے ہوئے بین الاقوامی میدان میں حالیہ تبدیلیوں اور ممالک کے مابین تعاون کی ترقی کے لئے نئی صورتحال پیدا ہونے کے پیش نظر ہمیں ایران اور یورپی یونین  کے درمیان باہمی تعلقات کو بحال کرنے کی کوشش کرنی چاہیے۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے دنیا کے ممالک کے لئے کورونا کی وجہ سے پیدا ہونے والی پریشانیوں کا بھی حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ امید ہے کہ اس مسئلے کو قریب مستقبل میں حل کیا جائے گا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے اجتماعی اور عالمی کوششوں کی ضرورت ہے اور ممالک کرونا وائرس سے نمٹنے اور حتمی حل کے لیے میں اپنے تجربات اور کامیابیوں کو بانٹ سکتے ہیں۔

روحانی نے ایران اور یوروپی یونین کے مابین منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف جنگ ، ماحولیات ، صحت ، سیاحت اور نقل و حمل  کے شعبوں میں تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یوروپی کمیشن کے ساتھ باہمی تعلقات کے فروغ کیلیے بامقصد بات چیت کے تسلسل کا خیر مقدم کیا۔

اس موقع میں شارل میشل نے امریکی یکطرفہ علیحدگی کے بعد جوہری معاہدے کی حمایت میں یورپ کے مؤقف کا ذکر کرتے ہوئے کو  ایک بین الاقوامی معاہدے کے طور پر جوہری معاہدے کے برقرار رکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔

انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی میدان میں پیدا ہونے والی نئی شرائط اور امریکہ میں حکومت کی تبدیلی کے پیش نظر ہمیں اس معاہدے کو برقرار رکھنے اور اس پر مکمل طور پر عمل درآمد کے لئے تمام مواقع کا استعمال کرنا چاہئے اور یوروپی یونین اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرے گا۔

میشل نے امریکی اقتصادی پابندیوں کی وجہ سے ایران کے لئے پیدا ہونے والی چیلنجوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ فطری بات ہے کہ ایران کو جوہری معاہدے کے معاشی فوائد سے لطف اندوز اٹھانا ہوگا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 7 =