ایران کی پڑوسی ملکوں کی منڈیوں کے 20 فیصد کے حصول کی منصوبہ بندی

تہران، ارنا- ایران کی تجارتی ترقیاتی تنظیم کے سربراہ نے کہا ہے کہ ہمسایہ ملکوں میں ایک ہزار 100 ارب ڈالر کی صلاحیتوں کے پیش نظر؛ ہم نے پڑوسی ملکوں کی منڈیوں کے 20 فیصد کے حصول کیلئے منصوبہ بندی کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "حمید زاد بوم" نے آج بروز بدھ کو مزاحتمی معیشت سے متعلق منعقدہ ساتویں کانفرنس کے دوران، گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کیخلاف عائد پابندیوں کا مقصد، تجارتی تعلقات اور بین الاقوامی لین دین کی راہ میں رکاوٹیں حائل کرنے کا ہے؛ لیکن ہم، پڑوسی ممالک پر توجہ مرکوز کرنے کی حکمت عملی اپناتے ہوئے موجودہ صورتحال میں تعلقات کی سطح کے تحفظ کی کوشش کریں گے۔

زادبوم کا کہنا ہے کہ 2019 سے اب تک ایران کی ہمسایہ ملکوں کی برآمدات میں سالانہ 5 سے 7 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

نائب ایرانی وزیر برائے صنعت، تجارت اور کان کنی نے کہا کہ ہمسایہ ملکوں میں ایک ہزار 100 ارب ڈالر کی صلاحیتوں کے پیش نظر، ہم نے قائد اسلامی انقلاب کی ہدایت سے پڑوسی ملکوں کی منڈیوں کے 20 فیصد کے حصول کیلئے منصوبہ بندی کی ہے جو تقریبا 200 ارب ڈالر کی مالیت پر مشتمل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حالیہ سالوں کے دوران، ایران کی نان آئل مصنوعات کی برآمدات کی شرح 44 سے 45 ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہے اور اب ملکی وسائل اور ملکی پیداوار پر بھروسہ کرکے برآمدات میں اضافے کی گنجائش ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان سے تجارتی تعلقات کی توسیع سے متعلق بے پناہ صلاحتیں ہیں جبکہ عراق اور افغانستان کی منڈیوں میں مزید سرگرم ہونے کیلئے مزید کام کی ضرورت ہے۔

زادبوم نے یوریشیائی ملکوں سے تجارتی تعلقات کے فروغ کی پالیسی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ فی الحال ہمارے 6 ممالک کیساتھ ترجیحی معاہدے ہیں اور ایران کا شام کیساتھ آزاد تجارت کا معاہدہ ہے اور سربیا سے آزاد تجارتی معاہدے کو سرانجام دینے کیلئے ساتھ مذاکرات کر رہے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 7 =