ایران کی دفاعی حکمت عملی میں مہلک ہتھیاروں کی کوئی جگہ نہیں ہے: روحانی

تہران، ارنا- ایرانی صدر نے کہا ہے کہ ہم نے بار بار کہا ہے کہ ایٹمی ہتھیاروں خاص طور پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے لئے ملک کے دفاعی پروگرام میں کوئی جگہ نہیں ہے اور یہ نظام کا مستحکم نقطہ نظر ہے۔

یہ بات ایرانی صدر مملکت ڈاکٹر حسن روحانی نے بدھ کے روز کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ایرانی دفاعی حکمت عملی میں ایٹمی ہتھیاروں سمیت تباہی پھیلانے والے مہلک ہتھیاروں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے اور یہ ایرانی نظام کا مستحکم موقف ہے۔

ایرانی صدر نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نہ جوہری ہتھیار کا مالک ہونا چاہتا ہے ، نہ جوہری ہتھیار کا استعمال کرنا چاہتا ہے۔

روحانی نے کہا کہ ہم پرامن جوہری ٹکنالوجی کی تلاش میں ہے جو ہمارا حق ہے۔

ایرانی صدر نے بتایا کہ ہم این پی ٹی کے ممبر ہیں ہم اور ایجنسی کے ساتھ سیف گارڈ کے طور پر ایک معاہدہ ہے اور ہم اس سیف گارڈ کا نفاذ کریں گے اور ہم اب تک نفاذ کر چکے ہیں۔ ہم ہرگز خفیہ جوہری سرگرمیاں کرنا چاہتے ہیں اور یہ اسلامی جمہوریہ ایران کا مستحکم فیصلہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر پوری دنیا ہمیں یہ بتائے کہ ایران کے پاس جوہری ہتھیار رکھنا بہت اچھا ہے ، تو ہمارا نقطہ نظر تبدیل نہیں ہوگا۔" ہماری رائے سپریم لیڈر کی رائے ہے اور ہم اس عہد کو نہیں توڑیں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha