ایران، ہرات کے گورنر کی درخواست پر افغانستان میں امدادی فورسز بھیج رہا ہے

مشہد، ارنا-  ایرانی صوبے خراسان رضوی کے کرائسس آفس کے ڈائریکٹر جنرل نے کہا ہے کہ اس صوبے کے پڑوس میں واقع ہرات کے گورنر کی درخواست کے بعد، افغانستان کے اندر آگ بجھانے کے لئے امدادی دستوں اور فائر فائٹنگ کے سامان بھیجنے کا آپریشن جاری ہے۔

ان خیالات کا اظہار "محسن نجات" نے ہفتے کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ صوبے خراسان رضوی کے مشرقی سرحدی علاقے دوغارون کے قریب اور افغانستان میں اسلام قلعہ سرحدی کسٹم ادارے میں دھماکہ اور بڑے پیمانے پر آتش زدگی کے بعد، صوبے خراسان میں بحران کے انتظام سے متعلق اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔

نجات نے کہا کہ ہم بھی دوغاروں سرحدی علاقے اور تایباد میں واقع کسٹم اداروں میں امدادی فوجوں کو تعینات کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی سرحدوں کے قریب بڑے پیمانے پر آتشزدگی کی وجہ سے دوغاروں میں فائر فائٹنگ کے مکمل آلات کے حامل درجنوں ہلکے اور بھاری فائر ٹرک کو تعینات اور فعال کردیا گیا تھا۔

نجات نے کہا کہ امدادی کارکنوں اور فائر فائٹرز کو خصوصی گاڑیوں اور سامان کے ساتھ افغانستان میں دھماکوں کے جائے وقوع پر بھیجے جار ہے ہیں۔

واضح رہے کہ افغانستان کے سرحدی علاقے اسلام قلعہ میں حالیہ دھماکے کے نتیجے میں کم از کم 50 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں اور دسیوں ٹرکوں بھی تباہ ہوگئے ہیں۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha