امریکی حکومت میں تبدیلی کا تہران ماسکو تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑتا ہے

ماسکو، ارنا – ایرانی اسپیکر نے کہا ہے کہ امریکی حکومت میں تبدیلی کا تہران ماسکو تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑتا ہے۔

یہ بات محمد باقر قالیباف نے روس کے 24 ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اسٹریٹجک تعلقات کے حصول کے لئے ایران اور روس کے مابین 50 سالہ تعاون کو مدِّ نظر رکھا جانا چاہیے۔

قالیباف نے بتایا کہ امریکی حکومت میں تبدیلی تہران اور ماسکو کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو متاثر نہیں کرسکتی ہے۔

انہوں نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے بتایا کہ ایران اور روس مختلف شعبوں میں ایک دوسرے کی تکمیل کرسکتے ہیں۔
یاد رہے کہ ایرانی اسپیکر محمد باقر قالیباف نے اتوار کے روز ایک اعلی سطحی وفد ماسکو کا دورہ کیا تھا جو گزشتہ روز وطن پہنچ گئے۔

تفصیلات کے مطابق، ایرانی پارلیمنٹ میں قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے چیئرمین اور ترجمان علامہ "مجتبی ذوالنوری" اور "ابوالفضل عمومی"، توانائی کمیشن کے سربراہ "فریدون عباسی"، زراعتی کمیشن کے سربراہ "سید جواد ساداتی نژاد"، ڈپٹی اسپیکر برائے بین الاقوامی امور "حسین امیر عبدالہیان"، اسپیکر کے مشیر "بابک نگاہداری"، اس تین روزہ دورے کے دوران قالیباف کے ہمراہ تھے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

https://twitter.com/IRNAURD

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha