ایرانی عدلیہ کے سرابرہ کا شہید جنرل سلیمانی کے قتل کیس پر عراقی اقدامات کا شکریہ

بغداد، ارنا- ایرانی عدلیہ کے سربراہ علامہ "سید ابراہیم رئیسی" نے عراقی جوڈیشل کونسل کے چیئرمین "فائق الزیدان" سے ایک مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران، جنرل سلیمانی اور ابومہدی المہندس کے قتل کیس پر عراقی عدلیہ کے اقدامات کا شکریہ ادا کیا۔

رپورٹ کے مطابق، علامہ رئیسی نے عدالتی تعاون کے شعبے میں دونوں ملکوں کے درمیان مفاہمت کی تین یادداشتوں پر دستخط کے بعد عراقی ہم منصب سے پریس کانفرنس کے دوران، اس امید کا اظہار کردیا کہ جنرل سلیمانی اور ابومہدی المہندس کے قتل کیس پر دونوں ملکوں کے درمیان تعاون سے اچھا نتیجہ نکلے گا۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ اس قتل میں ملوثیں کی سزا، اقوام عالم کیخلاف ظلم کرنے کا ارادہ رکھنے والوں کو روکنے میں مددگار ثابت ہوگی۔

ایرانی عدلیہ کے سربراہ نے دو دوست اور ہمسایہ ممالک کے درمیان عدالتی تعاون کے فروغ پر زوردیا۔

انہوں نے دونوں ملکوں کے درمیان مفاہمت کی تین یادداشتوں پر دستخط سے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس اجلاس کے دوران، مختلف مسائل بشمول زائرین کی آمد و رفت، تجارتی لین دین، کرپشن کیخلاف مشترکہ مقابلہ اور مجرمین کی حوالگی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

علامہ رئیسی نے کہا کہ ایرانی اور عراقی قیدیوں کے مسائل کا بھی وزیر اعظم اور صدر مملکت عراق سے ملاقاتوں میں جائزہ لیا جائے گا۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ ان مفاہمتی یادداشتوں کے نفاذ سے دونوں ملکوں کے عدالتی تنظیموں کے درمیان تعلقات میں مزید قربت اور گہرائی آئے گی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha