انقلاب اسلامی کی بدولت ملک میں 800 دفاعی مصنوعات تیار کی جاتی ہیں: ایرانی وزیر دفاع

قزوین، ارنا – ایرانی وزیر دفاع نے کہا ہے کہ انقلاب سے پہلے ملک میں 30 دفاعی مصنوعات تیار کی جاتی تھیں جو غیر ممالک پر منحصر تھیں لیکن آج انقلاب کی بدولت اور مقامی سائنسدانوں کی کوششوں سے800 دفاعی مصنوعات تیار کی جاتی ہیں۔

یہ بات امیر حاتمی نے پیر کے روز صوبے قزوین کی ایک نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ انقلاب سے پہلے ملک کی دفاعی مصنوعات کی گنتی 30 تھی  جبکہ اب ایرانی انقلاب کی برکت اور مقامی سائنسدانوں کی جد وجہد سے یہ مصنوعات کی تعداد 800 تک پہنچ چکی ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ اسلامی جمہوریہ کی دفاعی حکمت عملی فعال دفاعی ڈٹرنس ہے سرگرم عمل ہے اور جہاں بھی ملک کو کوئی خطرہ لاحق ہے مسلح افواج اس کا جلد از جلد جواب دیں گی۔

ایرانی وزیر دفاع نے بتایا کہ خطے کی سلامتی خطی ممالک کے ذریعہ فراہم کی جانی چاہئے نہ دنیا کے دیگر ممالک کے ذریعہ۔

بریگیڈیئر جنرل حاتمی نے کہاکہ ہمیں بتاتے ہیں کہ آپ ہتھیار کیوں بناتے ہیں اور ہم ان کو بتاتے ہیں کہ  وہ ممالک جن کے پاس ہتھیار نہیں تھے آپ نے ان کے ساتھ کیا سلوک کیا؟ ان کی سرنوشت کیا ہوا؟

انہوں نے بتایا کہ دشمن چاہتا ہے کہ ہمارے پاس اسلحہ اور دفاعی صلاحیتیں نہ ہوئے  تاکہ جب چاہتا ہے ملک کو دہمکیاں بھی اسلامی جمہوریہ کی مرضی کو اپنے خطرات کو دھمکیاں دیں لیکن ہم ہمیشہ ملکی دفاع کو مستحکم کرنے کے لئے کوشاں رہیں گے ، اور اس مسئلے کا کسی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha