جنگی جنون کا شکار ممالک یمن کی ناکہ بندی کا خاتمہ دیں: ایران

تہران، ارنا- ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ جنگی جنون کا شکار ممالک، یمن کیخلاف جارحیت سے متعلق اپنی چھ سالہ اسٹریٹجک غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے یمن میں قتل اور خونریزی کا خاتمہ دیں اور پُرامن رویے اپنائیں۔

ان خیالات کا اظہار "سعید خطیب زادہ" نے ہفتے کے روز یمن سے متعلق امریکی حکام کے حالیہ بیانات سے متعلق سوال کے جواب میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب اتحاد کی حمایت کا خاتمہ اور اس کو ہتھیاروں کی عدم فروخت کا اقدام اگر سیاسی دکھاوے نہ ہو تو گزشتہ کی غلطیوں کو سدھارنے سے متعلق ایک اچھا اقدام ہوسکتا ہے۔

 خطیب زادہ نے کہا کہ صرف اس مسئلے سے یمن کا بحران کا خاتمہ نہیں ہوگا بلکہ یمن کی فضائی، سمندری اور زمینی ناکہ بندی کا خاتمہ کرنا ہوگا جس کی وجہ سے ہزاروں یمنی شہری ادویات اور خوارک کی عدم فراہمی پر جاں بحق ہوگئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ سعودی عرب کی سرکردگی میں یمن کیخلاف فوجی جارحیت کرنے والے دیگر ممالک کے حلموں کا خاتمہ کرنا ہوگا۔

خطیب زادہ نے کہا کہ عالمی برادری سمیت سعودی عرب کو ہتھیار بیجنے والے اور اس کی حمایت کرنے والے ممالک کو سعودی عرب کی حمایتوں کا خاتمہ کرنا ہوگا تا کہ یمن میں اس انسانی تباہی کا سلسلہ ختم ہوجائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بڑی افسوس کی بات ہے کہ سعودی عرب نے یمن کیخلاف جنگ کے آغاز سے خود کو زیادہ نقصان کا شکار کیا اور اب وہ امریکی دباؤ کے تحت دوسرے ممالک کیخلاف نابجا الزام لگاکر یمن کیخلاف جارحیت اور ہزاروں نہتے بچوں اور خواتین کے قتل کی پردہ پوشی کرنی کی کوشش کر ہا ہے۔

ایرانی ترجمان نے اس امید کا اظہار کردیا کہ جنگی جنون کا شکار ممالک یمن کیخلاف جارحیت سے متعلق اپنی چھ سالہ اسٹریٹجک غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے یمن میں قتل اور خونریزی کا خاتمہ دیں اور پُرامن رویے اپنائیں۔

 انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران یمن کی حمایت پر عالمی برادری کی ہر کسی طرح کوشش کی حمایت کرے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha