قرارداد 2231 کیخلاف ورزی بائیڈن حکومت کیلئے اچھا آغاز نہیں ہے: ایرانی مندوب

نیویارک، ارنا- اقوام متحدہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ امریکہ، ایران کیخلاف غیرقانونی پابندیوں سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کیخلاف ورزی کر رہا ہے اور یہ بائیڈن حکومت کیلئے اچھا آغاز نہیں ہے۔

ان خیالات کا اظہار "مجید تخت روانچی" نے آج بروز جمعرات کو ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ نئی امریکی انتظامیہ کثیرالجہتی کی حمایت کرنے کا دعوی کرتی ہے، لیکن وہ بین الاقوامی عدالت انصاف (آئی سی جے) کے ایران کیخلاف پابندیوں کے معاملے پر اپنے اعتراض کو مسترد کرنے پر مایوسی کا اظہار کرتی ہے۔

تخت روانچی نے کہا کہ امریکہ ایران کیخلاف غیرقانونی پابندیوں سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کیخلاف ورزی کر رہا ہے اور یہ بائیڈن حکومت کیلئے اچھا آغاز نہیں ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ نے بھی گزشتہ روز کے دوران کہا کہ بین الاقوامی عدالت انصاف (آئی سی جے) نے اب ایران کیخلاف غیر قانونی پابندیوں کے معاملے پر امریکہ کے ابتدائی اعتراض پر تمام دلائل کو مسترد کردیا ہے؛ یہ 3 اکتوبر 2018 کے فیصلے کے بعد ایران کیلئے ایک اور قانونی فتح ہے۔

ظریف نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے بدستور بین الاقوامی قوانین کا احترام کیا ہے اور اب امریکہ کیجانب سے اپنے بین الاقوامی وعدوں پر قائم رہنے کا وقت آگیا ہے۔

واضح رہے کہ نیدرلینڈز میں قائم ایرانی سفارتخانے کے مطابق، بین الاقوامی عدالت انصاف (آئی سی جے) نے 1334 کنونشن کی خلاف ورزی کے معاملے پر امریکہ کے ابتدائی اعتراضات کو واضح طور پر مسترد کردیا اور اس کنونشن کے تحت ایرانی شہریوں، کمپنیوں اور حکومت سے متعلق امریکی ذمہ داریوں کی خلاف ورزیوں کو دور کرنے کے لئے اپنی اہلیت کا اعلان کیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha