ایران کی فردو اور نظنر جوہری تنصیبات میں نئے سنٹری فیوجز کی تنصیب

لندن، ارنا- ویانا کی بین الاقوامی تنظیموں میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے کے وعدوں میں کمی لانے کے فریم ورک کے اندر نطنز اور فردو جوہری تنصیبات میں نئے سنٹری فیوجز کی تنصیب کی گئی۔

ان خیالات کا اظہار "کاظم غریب آبادی" نے منگل کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے ایرانی جوہری سائنسدانوں کی کوششوں کا شکریہ کرتے ہوئے کہا کہ آئی۔ آر۔وان سنٹری فیوجز کے مقابلے میں تقریبا 4 گنا زیادہ صلاحیت رکھنے والے 384 آئی۔ آر۔ٹو۔ ایم سنٹری فیوجز پر مشتمل دو چینز کو نطنز میں تنصیب کردی گئی جو یو ایف۔6 کیساتھ کام کر رہے ہیں۔

غریب آبادی نے کہا کہ فردو جوہری تنصیبات میں بھی آئی- آر۔6 سنٹری فیوجز پر مشتمل دو چینز کی تنصیب کا آغاز ہوچکا ہے اور مستقبل میں مزید سنٹری فیوجز کی تنصیب کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ عالمی جوہری ادارہ، ایران کی جوہری سرگرمیوں کی نگرانی کرسکتا ہے اور اسے منصوبوں کی پیشرفت سے اطلاع دی جاتی ہے۔

واضح رہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے، جوہری معاہدے میں امریکی علیحدگی کے دوسال گزرنے اور یورپی فریقین کیجانب سے اپنے وعدوں پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے اپنے جوہری وعدوں میں کمی لانے پر اقدام اٹھایا۔

تاہم ایرانی حکام نے بدستور اس بات پر زور دیا ہے اگر دیگر فریقین اپنے جوہری وعدوں پر پورا اتریں اور ایران بھی اس معاہدے کے معاشی ثمرات سے مستفید ہوجائیں تو ہم دوبارہ اپنے جوہری وعدوں کو بھر پور طریقے سے عمل کرنے پر تیار ہیں۔

رائٹرز نیوز ایجنسی کے مطابق، عالمی جوہری ادارے نے نطنز جوہری تنصیبات میں نئے سنٹری فیوجز کی تنصیب سے یورنیم کی افزودگی کے عمل کی تصدیق کی ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha