ایران میں انقلاب کے آغاز کے مقابلے میں بجلی گھروں کی صلاحیت میں 12 گنا اضافہ ہوا ہے

تہران، ارنا- ایرانی وزیر توانایی نے کہا ہے کہ اسلامی انقلاب کے آغاز کے مقابلے میں ملک میں نصب شدہ بجلی گھروں کی صلاحیت 7 ہزار میگاواٹ سے 85 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گئی ہے یعنی بجلی گھروں کی صلاحیت میں 12 گنا اضافہ ہوا ہے۔

"رضا اردکانیان" نے پیر کے روز  گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ گزشتہ 42 سال کے دوران، اس بات کے باوجود کہ ایران کی آبادی 3۔2 گنی ہوگئی ہے تو پھر بھی ملک میں نصب شدہ بجلی گھروں کی صلاحیت 7 ہزار میگاواٹ سے 85 ہزار میگاواٹ تک پہنچ گئی ہے یعنی بجلی گھروں کی صلاحیت میں 12 گنا اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ سردیوں میں بجلی گھروں میں تقریبا 80 فیصد ایندھن کی کھپت گیس کے ذریعہ فراہم کی جاتی ہے۔

ایرانی وزیر توانائی نے کہا کہ آج، دنیا میں امریکہ، روس اور جاپان کے بعد ایران چوتھا ملک ہے جس کے بجلی گھروں میں ایندھن کا سب سے بڑا حصہ گیس ہے؛ جو صاف ایندھن میں سے ایک ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی انقلاب سے پہلے، ملک میں گندے پانی کی صفائی کے پلانٹوں کی تعداد چار تھی جبکہ ملک کی آبادی موجودہ آبادی کا 40 فیصد تھی اور دولت، وسائل وغیرہ موجودہ مقدار سے زیادہ تھا اور دنیا تک رسائی محدود نہیں تھی۔

اردکانیان نے حالیہ دنوں میں کہا تھا کہ ملک میں بجلی پیداوار کی صلاحیت میں مزید اضافہ ہوجائے گا جس کی مقدار ملک کی 80 لاکھ سے زائد آبادی کے پیش نظر اچھی سطح پر ہے اور عوامی فلاح و بہبود سمیت منصوبوں کیلئے بنیادی ڈھانچے کی فراہمی اور ان میں ترقی اور توسیع  کے عالمی معیاروں کے مطابق ہے۔

اردکانیوں نے ملک کے مختلف صوبوں میں تین ہزار میگاواٹ کی صلاحیت کے حامل نئے تھرمل پاور پلانٹس کے قیام پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ آج توانائی کا اہم کردار ہم سب پر واضح ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ توانائی نہ صرف گھریلو اور تجارتی استعمال کیلئے ہے بلکہ معاشرے کی فلاح و بہبود، سلامتی اور پیداوار کے فروغ سمیت کان کنی، صنعت اور زراعت کے شعبوں اور صحت کی دیکھ بھال اور سائنس اور تحقیق کی توسیع اور ترقی میں بھی اس کا اہم کردار ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha