خطے کے تناؤ کی کمی کیلیے علاقائی فریم ورک کا استعمال کریں گے: ایرانی وزیر خارجہ

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہم جارجیا میں اپنے دوستوں کی پریشانی کو جانتے ہیں اسی لیے تناؤ کو کم کرنے اور تعاون کو فروغ دینے کے لئے علاقائی فریم ورک کو استعمال کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔

محمد جواد ظریف نے جمعرات کے روز جو جارجیا کے دورے پر ہے، کہی۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا خطہ بہت مشکل حالات سے گزر چکا ہے اور اب ہمیں ان مشکل حالات سے گزرنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں خطے میں باہمی تعاون کے لئے نئی شرائط کو استعمال کرنا چاہئے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ ہمارے خطے میں دوبارہ جنگ اور تنازعہ نہیں ہو گا۔

ظریف نے اپنی مشاورت کے بارے میں کہا کہ ایران اور جارجیا کے درمیان دیرینہ تعلقات ہیں اور جارجیا کے ساتھ ٹرانزٹ کے میدان میں باہمی تعاون بہت اچھا ہے۔

انہوں نے جارجیا میں اپنے پچھلے ​​دورے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دوطرفہ تعلقات کے علاوہ ہم علاقائی تعاون پر تبادلہ خیال کریں گے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے بتایا کہ ہم کچھ ممالک کے بارے میں جارجیا میں اپنے دوستوں کی پریشانی کو جانتے ہیں تو ہم تناؤ کو کم کرنے اور تعاون کے لئے علاقائی فریم ورک کو استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین ٹرانزٹ کے میدان میں بہت مثبت تعاون ہے اور  ہم جنوب مغربی کوریڈور پر  آرمینیا اور آذربائیجان کے ساتھ بات چیت کی ہے اور یہ کوریڈور ہمارے لئے جارجیا اور راستے میں موجودہ ممالک کے لئے مفید ہوسکتا ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ نے اپنے علاقائی دورے میں باکو اور ماسکو کا دورہ کیا ہے اور وہ آرمینیا کے دورے کے اختتام کے بعد تبلیسی کے دورے پر روانہ ہوگئے۔

اس کے علاوہ ایرانی وزیر خارجہ، ترک حکام سے مذاکرات کیلئے انقرہ کا دورہ بھی کریں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha