معاشی ڈپلومیسی کی ترقی کے طریقے سے ایکو تنظیم کیساتھ غیر ملکی تجارت کا فروغ

تہران، ارنا - ایران ترکی کے چیمپر آف کامرس کے سربراہ نے کہا ہے کہ اقتصادی تعاون تنظیم (ای سی او) کے ممبر ممالک کے ساتھ اقتصادی سفارتکاری کے فروغ سے غیر ملکی تجارت میں نمایاں اضافہ ہوسکتا ہے۔

یہ بات مہرداد سعادت نے جمعرات کے روز ارنا کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں کورونا وائرس کے پھیلانے سمیت مختلف وجوہات کی بناء پر تجارت کا حجم کم ہوا ہے۔ اس سے قبل ای سی او کے ممبر ممالک کے ساتھ ہماری تجارت بات زیادہ تھی اور اب سے  اقتصادی سفارتکاری کے فروغ کے ساتھ ، تجارتی تبادلے اور ان کے حجم  کو فروغ دے سکتے ہیں۔

انہوں نے دوسرے ممالک کو ایران کی 21 ارب ڈالر برآمدات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس عرصے کے دوران ، 75٪ مصنوعات ہمسایہ ممالک کو برآمد کی گئی ہے ، جس میں ترکی کا حصہ 7.4 بلین ڈالر ہے۔

ایران، ترکی، افغانستان، جمہوریہ آذربائیجان، کرغزستان، قازقستان، پاکستان، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان اقتصادی تعاون تنظیم (ای سی او) کے ممبر ہیں۔ جو روان سال کے پہلے نصف میں ایران اور ان ممالک کے ساتھ 9 ملین اور 199 ہزار ٹن ( 4 ارب اور 542 ملین اور 530 ہزار اور 920 ڈالر)کی تجارت ہوئی تھی۔

اس عرصے میں ایران کی برآمدات کا حصہ 6 ملین 540 ہزار 295 ٹن تھا، جو 2 ارب 526 ملین 18 ہزار 538 ڈالر کے برابر ہے ، جس میں افغانستان 1 ارب 108 ملین 798 ہزار 627 ڈالر کے ساتھ ایرانی برآمدات کی پہلی منزل ہے۔

اس عرصے میں ایران کی برآمدات کا حصہ 6 ملین 540 ہزار 295 ٹن تھا، جو 2 ارب 526 ملین 18 ہزار 538 ڈالر کے برابر ہے ، جس میں افغانستان 1 ارب 108 ملین 798 ہزار 627 ڈالر کے ساتھ ایرانی برآمدات کی پہلی منزل ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha