بوشہر پاور پلانٹ میں نئے یونٹس کی تعمیر پر بات چیت کی گئی: روسی وزیر خارجہ

ماسکو، ارنا- روسی وزیر خارجہ نے اپنے ایرانی ہم منصب کیساتھ ملاقات کے بعد کہا ہے کہ انہوں نے ظریف کیساتھ ایران کے جنوب میں واقع بوشہر پاورپلانٹ میں نئے یونٹس کی تعمیر پر بات چیت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق، سرگئی لاوروف نے آج بروز منگل کو محمد جواد ظریف کیساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران، دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کو دوستانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم تمام شعبوں میں ایک دوسرے کیساتھ تعاون کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ظریف کیساتھ ایران کے جنوب میں واقع بوشہر پاورپلانٹ میں نئے یونٹس کی تعمیر پر بات چیت کی گئی۔

لاوروف نے اس امید کا اظہار کردیا کہ امریکہ، ایران جوہری معاہدے میں از سر نو شامل ہوجائے گا اور یہ جوہری معاہدے پر بھر پور نفاذ کیلئے ایران کا شرط ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ہم کوشش کرتے ہیں تا کہ مستقبل قریب میں ایران اور امریکہ، اپنے جوہری وعدوں پر پوری طرح عمل کریں۔

روسی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران اور روس کے تعلقات، غیر قانونی پابندیاں عائد کرنے والا امریکی خواست سے وابستہ نہیں ہے۔

لارورف نے اس بات پر زور دیا کہ ٹرمپ انتظامیہ نے دیگر ملکوں کو اپنے وعدوں کی خلاف ورزی پر اکسایا تھا۔

انہوں نے کہا کہ روس، دیگر ملکوں کیساتھ  مل کر جوہری ہتیھاروں کے عدم پھیلاؤ پر تعاون کرے گا۔

روسی وزیر خارجہ نے کہا کہ شام پر آستانہ امن عمل کا اگلا اجلاس فروری میں سوچی میں انعقاد کیا جائے گا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha