ایران بٹومین کی تیاری میں مشرق وسطی کی پہلی اور دنیا کی ساتویں پوزیشن پر کھڑا ہے

تہران، ارنا- ایران، مشرق وسطی میں بٹومین کا سب سے بڑ تیار کرنے والا ملک ہے جو اپنی ملکی صلاحیتوں کو بروئے لاتے ہوئے اس پروڈکٹ کی برآمدات میں اضافے کیساتھ پیداواری یونٹوں میں اضافہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق، کل بروز جمعرات کو پاسارگاد انرجی ڈویلپمنٹ گروپ کے تحت ملک میں سب سے بڑی بٹومین ریفائنری کے قیام کا آپریشن، غیر ملکی لائسنس کی موجودگی کے بغیر اور صرف  ملکی انجینئروں کی صلاحیت پر شروع ہوگا؛ جس کی تقریب میں صدر روحانی ویڈیو کانفرنس کے ذریعے حصہ لیں گے۔

اس سلسلے میں قشم سپر ہیوی آئل ریفائنری کے سی ای او نے اس منصوبے میں ملکی انجینئرز کی صلاحیتوں اور ملکی ساختہ آلات کی تیاریوں پر انحصار کرنے کا ذکر کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ اس ریفائنری کا منصوبہ روزانہ 70 ہزار بیرل کی گنجائش کیساتھ بنایا گیا ہے جو 2 مختلف مراحل میں چل رہا ہے اور ہر مرحلے میں 35 ہزار بیرل بٹومین کی تیاری ہوگی۔

"قاسم محمودی" نے کہا کہ اس منصوبے کے نفاذ کے لئے اب تک تقریبا 135 ملین یورو زرمبادلہ کے وسائل خرچ ہوچکے ہیں، جن میں سے 85 ملین یورو قومی ترقیاتی فنڈ سے منسلک ہیں اور باقی پاسارگاد انرجی ڈویلپمنٹ گروپ نے فراہم کیا ہے۔

واضح رہے کہ ایران بٹومین کی پیداوار میں مشرق وسطی کی پہلی پوزیشن پر کھڑا ہے اور اسے اس حوالے سے دنیا کی ساتویں پوزیشن حاصل ہے۔

اسلامی جمہوریہ ایران میں دنیا کے 3۔8 فیصد بٹومین کی ضروریات کو پوارا کرنے کی صلاحیت ہے۔

ایران میں سالانہ 5 ملین ٹن بٹومین کی تیاری ہوجاتی ہے جس میں آدھا حصہ اندرون ملک ہی استعمال کیا جاتا ہے اور باقی کو مشرق وسطی، جنوبی ایشیا، مشرقی ایشیا، آفریقہ اور یورپ کے ملکوں میں برآمد کیا جاتا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 6 =