12 جنوری، 2021 3:26 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 84183325
1 Persons
ایرانی صوبے مرکزی میں غیر ملکی سرمایہ کاری پر ایک جھلک

اراک، ارنا- ایرانی صوبے مرکزی کو جغرافیائی محل وقوع اور شہروں اور صنعتی علاقوں میں مختلف ڈھانچے کی فراہمی کے سلسلے میں حالیہ برسوں میں غیر ملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے میں نمایاں کامیابیاں حاصل ہوئی ہیں۔

دارالحکومت سے قربت، حالیہ برسوں میں، پانی، بجلی، گیس اور شہروں اور صنعتی علاقوں تک سڑکوں تک رسائی جیسے بڑے سروس انفراسٹرکچر کے وجود کی وجہ سے بین الاقوامی کمپنیوں نے صوبے میں سرمایہ کاری کیلئے اپنی تیاری کا اظہار کرلیا ہے۔

صوبے مرکزی کے گورنر جنرل نے حالیہ سالوں کے دوران، اس صوبے میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے حجم پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ 2016 سے 2019 کے سالوں کے دوران، مرکزی میں 2 ارب 100 ملین ڈالر سے زائد کی مالیت پر مشتمل مختلف منصوبوں پر غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے جس میں گزشتہ سالوں کے مقابلے میں 200 فیصد سے زائد اضافے کا ریکارڈ کیا گیا ہے۔

"سید علی آقازادہ" نے مزید کہا کہ اس صوبے میں سب سے زیادہ توانائی، صنعت اور زراعت کے شعبوں میں غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کیخلاف امریکی پابندیوں کے باوجود گزشتہ سال کے دوران، 5 منصوبوں کی غیر ملکی سرمایہ کاری سے منظوری دی گئی جن کی مالیت کی مجموعی شرح ایک ارب 530 ملین ڈالر ہے۔

اس کے علاوہ 2019 میں صوبے مرکزی کے مختلف اقتصادی شعبوں میں 6 غیر ملکی سرمایہ کاروں نے ایک ارب 550 ملین ڈالر کی مالیت پر مشتمل مختلف منصوبوں پر سرمایہ کاری کی ہے جو صرف ایک ہی سال کے دوران، انتہایی قابل قدر ترقی ہے۔

رواں سال کے دوران میں بھی صحت اور کاسمیٹک مصنوعات سمیت مختلف قسم کی ادویات کی تیاری کے شعبے میں غیر ملکی سرمایہ کاری سے دو منصوبوں کی منظوری دی گئی۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 5 =