پاکستانی شیعوں کے قتل نے انسانیت کے دل کو مجروح کیا ہے

قم، ارنا- ایران میں ائمہ کرام کے فقہی مرکز کے سربراہ نے کہا ہے کہ پاکستانی شعیوں کے قتل نے انسانیت کے دل کو مجروح کر دیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں پاکستانی حکومت کے سامنے اپنے سخت احتجاج کا اظہار کرنا ہوگا اور ان جیسے اقدامات کی سخت مذمت کرنی ہوگی۔

ان خیالات کا اظہار آیت اللہ محمد جواد فاضل لنکرانی نے آج بروز ہفتے کو ایک اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے پاکستان میں بڑی بے دردی سے شعیوں کے حالیہ قتل پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لواحقین سے گہری ہمدردی کا اظہار کرلیا۔

آیت اللہ لنکرانی نے کہا ہے کہ کسی بھی طرح سے کسی بے گناہ انسان کا خون بہانا اسلام اور عقل و دانش میں بھی قابل قبول نہیں ہے؛ اور انھیں آگاہ ہونا چاہئے کہ کسی مومن کو بے انصافی سے قتل کرنا ان گناہوں میں سے ہے جس سے خدا کے قہر و غضب سے بچنا ممکن ہی نہیں ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستانی حکومت ایسے اقدامات کو ہونے کی اجازت کیوں دیتی ہے؟ حکومتوں کو ایسے اقدامات کو نہیں ہونے دینا چاہئے جو عقلی اور انسانیت اور آسمانی مذاہب کے خلاف ہوں، تمام انسانی مذاہب حتی کہ غیر الہی مذاہب بھی اس ناجائز طریقے سے قتل؛ نا قابل قبول ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتوں کے دوران، بلوچستان کے ضلع بولان کے علاقے مچھ میں کوئلہ فیلڈ میں داعش عناصر کی فائرنگ سے 11 کان کن جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے۔

پاکستان میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے بھی صوبے بلوچستان میں ایک دہشتگردانہ اقدام میں 11 کان کنوں کی شہادت کی مذمت کرتے ہوئے داعش کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کی ضرورت پر زور دیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha