امریکی اقدامات سے بُری طرح متاثر ہونے والے ایرانی شہری عدالتوں میں مقدمہ دائر کرسکتے ہیں

تہران، ارنا- ایرانی عدلیہ کے ترجمان نے کہا کہ وہ شہری جن کو امریکی مجرمانہ فعل سے نقصان پہنچا ہے وہ اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے اسلامی جمہوریہ ایران کی عدالتوں میں مقدمہ دائر کرسکتے ہیں؛ ابھی اس حوالے سے متعدد کیس سامنے آگئے ہیں جن کا جائزہ بھی لیا جا رہا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "غلامحسین اسماعیلی" نے منگل کے روز ایک پریس کانفرنس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہ جرائم کا ارتکاب، امریکی حکام کی فطرت میں شامل ہے جنہوں نے مختلف ادوار میں مختلف ممالک بالخصوص مشرق وسطی اور ایران میں متعدد جرائم کا ارتکاب کیے ہیں۔

ایرانی عدالیہ کے ترجمان نے کہا کہ چابہار دہشت گردی کے واقعے میں شہید ہونے والوں کے متعدد کنبوں سے متعلق ایک کیس جس نے امریکی حکومت کیخلاف مقدمہ دائر کیا؛ کیس کی سماعت عدالت میں ہورہی ہے اور امریکی حکومت کو متاثرہ کنبوں کو ایک ارب ڈالر ہرجانے ادا کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

اسماعیلی نے کہا کہ ایک اور معاملے میں، تہران میں امریکی مجرمانہ سرگرمی کے 14 متاثرین نے امریکی حکومت سے معاوضے کا مطالبہ کیا؛ جو ایرانی عدالت نے امریکہ کیجانب سے متاثرہ افراد کو مجموعی طور پر 26 ہزار ارب تومان ( ایرانی قومی کرنسی) ہرجانے ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے بہت سارے کیس سامنے آگئے ہیں اور وہ شہری جن کو امریکی مجرمانہ فعل سے نقصان پہنچا ہے وہ اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے اسلامی جمہوریہ ایران کی عدالتوں میں مقدمہ دائر کرسکتے ہیں جن کا ہم جائزہ لیں گے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha