شہید سلیمانی اور ابومہندس کا راستہ جاری رہے گا: عراقی سفیر

اسلام آباد، ارنا – پاکستان میں تعینات عراقی سفیر نے کہا ہے کہ شہید قاسم سلیمانی نے امریکہ ، ناجائز صیہونی ریاست اور ان کے کرائے کے فوجیوں کی اسلام پر حملہ کرنے کی سازش کو روک دیا لہذا سردار سلیمانی اور ابو مہدی المہندس کا راستہ ان کی شہادت سے ختم نہیں ہوا اور جاری رہے گا۔

یہ بات "حامد عباس" نے ہفتہ کے روز پاکستان میں شہید سلیمانی اور ان کے ساتھیوں کی شہادت کی پہلی برسی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ ، اسرائیل اور اس کے باڑے فوجیوں نے اسلام کے اندر سے ہی حملہ کرنے کی کوشش کی ، لیکن مزاحمتی محاذ اور اسلامی جمہوریہ ایران کی حمایت نے اس سازش کو روک دیا ، اور آئندہ بھی ہمیں اس طرح کے شیطانی منصوبوں کی شکست دیکھنے کو ملے گی۔

عباس نے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل نے داعش سمیت دہشت گرد گروہوں کی حمایت سے عراق کا استحصال کرنے کی کوشش کی مگر شہید سلیمانی اور اس کے ساتھیوں نے امریکہ اور اسرائیل کو اپنے مقاصد کے حصول سے روک دیا۔

پاکستان میں تعینات ایرانی سفیر نے بھی اس تقریب میں کہا کہ سردار سلیمانی انسانیت کی ایک گراں قدر خدمات تھے اور آج انسانیت ان پر فخر ہے ، ایک ایسا سردار جو سفارتکاری اور دیگر سیاسی و علاقائی مساوات کے میدان میں سرگرم عمل تھا اور اس نے ہمیشہ اسلامی مقام و وقار کے فروغ کے لئے اپنی جان کا نذرانہ پیش کیا۔

واضح رہے کہ 3 جنوری 2020 میں عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر "ابومهدی المهندس" شہید ہوگئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha