ایرانی دارالحکومت میں غیرملکی مہمانوں کی موجودگی میں شہید جنرل سلیمانی کی یادگاری تقریب کا انعقاد

تہران، ارنا – ایرانی عدلیہ کے سربراہ علامہ "ابراہیم ریئسی"، دوسرے اعلی حکام اور غیر ملکی مہانوں کی موجودگی میں شہید جنرل قاسم سلیمانی اور ان کے ساتھیوں کی شہادت کی پہلی برسی کا یکم جنوری 2021 کو تہران یونیورسٹی میں انعقاد کیا گیا۔

ایرانی عدلیہ کے سربراہ نے کہا کہ اس طرح بیداری حاج قاسم سلیمانی ، ابو مہدی المہندس اور ان کے ساتھیوں اور خطے کے شہدا کے خون کی بدولت کی کوششوں کی روشنی میں روشن ہوئی ہے ، وہ کبھی نہیں مرے گی۔
سپاہ پاسداران کے کمانڈر جنرل "حسین سلامی" نے اس تقریب کے دوران ایران مخالف امریکی دھمکیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ آج ہمیں کسی بھی طاقت سے نمٹنے میں کوئی پریشانی نہیں ہے۔ ہم دشمن کا مقابلہ کرکے میدان جنگ میں آخری لفظ کہہ سکیں گے۔
القدس فورس کے کمانڈر اسماعیل قاآنی نے کہا کہ جنرل سلیمانی کے قتل کے مجرموں کو ان کے اقدامات کی سزا دی جائے گی اور امریکہ کی طرف سے کی جانے والی برائیوں سے قدس فورس کی راہ اور مزاحمت کا راستہ تبدیل نہیں ہوگا۔
یہ بات قابل ذکر ہے کہ حالیہ دنوں میں عراق سمیت خطے کے بہت سے ممالک، شام، لبنان، پاکستان اور افغانستان میں جنرل سلیمانی اور المہندس کی شہادت کی پہلی برسی کی یاد دلانے اور ان شہدا کے قتل کے قانونی پہلوؤں کا جائزہ لینے کے لئے مختلف تقریبات ، رسومات اور کانفرنسوں کا مشاہدہ کیا گیا ہے۔
واضح رہے کہ 3 جنوری 2020 میں عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایئرپورٹ پر امریکہ کی جانب سے راکٹ حملے کیے گئے جس کے نتیجے میں پاسداران انقلاب کے کمانڈر قدس جنرل قاسم سلیمانی سمیت عراق کی عوامی رضاکار فورس الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر "ابومهدی المهندس" شہید ہوگئے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 12 =