ایران کا اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو خلیج فارس میں امریکی اقدامات پر انتباہ

نیویارک، ارنا - اقوام متحدہ میں ایرانی مستقل مندوب نے سلامتی کونسل کو خط بھیج کر خلیج فارس میں امریکی اشتعال انگیزیوں پر میں انتباہ کیا۔

ایرانی مندوب نے اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی کے سربراہ اور اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کو بھیجے گئے خط میں کہا کہ حالیہ ہفتوں میں خلیج فارس اور بحیرہ عمان میں امریکی فوج کی مہم جوئی میں اضافہ ہوا ہے۔
اس خط میں امریکہ کو خطے میں جدید ہتھیار بھیجنے کے علاوہ پچھلے چند ہفتوں میں کچھ اسٹریٹجک بمبار طیاروں کو اڑانے سمیت کچھ اشتعال انگیز فوجی کاروائیاں بھی کیں۔
خط میں کہا گیا ہے کہ اس اقدامات کے علاوہ ، امریکی حکام ایران کے خلاف جھوٹے اور اشتعال انگیز الزامات لگاتے رہے  جس سے اس حساس خطے کے سیکیورٹی کے ماحول کو مزید کشیدہ بنا دیا گیا۔
ایرانی مندوب نے کہا کہ اگر جنگ کے ان حامی اقدامات پر قابو نہ پایا گیا تو تناؤ بڑھ جائے گا اور اس کی ذمہ داری امریکہ سے ہوگی۔
اس خط میں جس میں کہا گیا ہے کہ ایران تنازعات کے تعاقب میں نہیں ہے ، ایران اپنے عوام ، سلامتی ، علاقائی سالمیت اور اہم مفادات کے تحفظ کا عزم واضح ہے ، اور اس بات کو بھی نظرانداز نہیں کیا جانا چاہئے کہ ایران کسی بھی ظلم و بربریت کا جواب دے گا۔
اس خط کے مطابق، یہ مہم جوئی اقوام متحدہ کے اعلامیے اور مقاصد کے ساتھ درجات کی ہے اور اس سے علاقائی اور بین الاقوامی امن و سلامتی پر سنگین اثرات مرتب ہوں گے اور سلامتی کونسل سے توقع یہ ہے کہ امریکہ بین الاقوامی قواعد و قانون کی پاسداری کرے اور اپنے غیر قانونی اقدامات کو روک کرے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =