افغان وزیر تجارت کا چابہار سے خواف- ہرات ریلوے کے منسلک ہونے کا مطالبہ

اسلام آباد، ارنا – افغانستان کے وزیر صنعت و تجارت نے خواف- ہرات ریلوے اور ایران کے مواصلاتی راستے کو افغانستان کے عوام اور کاروباری برادری کے لئے ایک عظیم کامیابی قرار دیتے ہوئے خواف – ہرات کی ریلوے لائن کو چابہار- زاہدان کی ریلوے لائن سے منسلک ہونا ایران کے ساتھ مشترکہ تجارت کو مضبوط بنانے کی ایک کرن ہوگا۔

یہ بات نثار احمد فیضی غوریانی جنہوں نے  پاک افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے آٹھویں اجلاس کی شرکت کے لیے اسلام آباد کے دورے پر ہے، ارنا کےنمائندے کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں کہی۔

انہوں نے ایرانی چابہار بندرگاہ سے ٹرانزٹ ٹریڈ سے متعلق افغانستان کو درپیش بینکاری کے مسئلے کے حل کے بارے میں کہا کہچابہار بندرگاہ کے ذریعے چین اور بھارت کو افغانستان کی برآمدات سے متعلق رقوم کے حصول میں دشواری اور بینکی چیلنجز نے ہماری نقل و حمل کی سرگرمی کی رفتار کو سست کردیا۔

غوریانی نے کہا کہ افغانستان نے امریکہ کے ساتھ چابہار بندرگاہ میں بینکنگ کے مسئلے پر بات چیت کی ہے اور چابہار بندرگاہ کو واشنگٹن کی پابندیوں کی فہرست سے خارج کردیا گیا ہے یہی وجہ ہے کہ بینکاری کے مسئلے پر امریکہ کے ساتھ متعدد بار تبادلہ خیال کیا گیا ہے اور امریکہ نے اس مشکل کے 100 فی صد حل کا وعدہ دیا ہے،

انہوں نے کہاکہ چابہار میں بینکنگ کا مسئلہ اگلے چند دنوں میں حل ہوجائے گا اور اس اہم ایرانی بندرگاہ کے ذریعے افغانستان کی ٹرانزٹ تجارت کو سبوتاژ کرنے کےلیے کوئی رکاوٹیں یا وجوہات باقی نہیں رہیں گی۔

انہوں نے چابہار کو ایک اسٹریٹجک بندرگاہ اور افغانستان اور خطے کے مفادات کے لیے ایک آسان راستہ قرار دیتے ہوئے  اور مزید کہا: ہم امید کرتے ہیں کہ دونوں ممالک کی کارو باری برادری کی سرگرمی کے فروغ کیلیے خواف ریلوے چابہار - زاہدان ریلوے منصوبے سے منسلک ہوجائے گا۔

افغان وزیر نے ایران کی بھرپور کوششوں اور حمایتوں پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایران افغانستان کو یورپی ممالک سے منسلک کرتا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ افغانستان ایرانی سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرنے کے لئے تیار ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha