ایران نے تاریخ کے دوران بدستور سرگرم کردار ادا کیا ہے: ظریف

تہران، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران نے تاریخ کے دوران بدستور سرگرم کردار ادا کیا ہے اور سفارتکاری کی اہمیت کو کم کرنے کی جو کوششیں ہو رہی ہیں وہ تاریخی اعتبار سے غلط اور عملی طور ایران کے کثیر الجہتی مفادات کیلئے نقصان دہ ہیں۔

ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے آج بروز اتوار کو ایران میں خارجہ پالیسی کی تاریخ سے متعلق منعقدہ چوتھی کانفرنس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج ہم سب سے پہلے ایران کے خارجہ تعلقات کی تاریخ سے جو کچھ سیکھ سکتے ہیں وہ یہ ہے کہ ایران نے تاریخ میں ہمیشہ سرگرم کردار کیا ہے اور ایرانیوں نے انتہائی مشکل حالات میں بھی اپنے کردار ادا کرنے کیلئے مواقع سے فائدہ اٹھایا ہے۔

ظریف نے کہا کہ یقینا، ان اعمال کا انداز اور معیار ایران کے اپنے، دوسروں، بین الاقوامی ماحول، نیز فیصلہ سازوں کے افکار اور تاریخ کے ہر دور میں خارجہ پالیسی کے مقاصد سے متاثر ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے خارجہ تعلقات کی تاریخ سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ سفارت کاری ہمیشہ ایرانی معاشرتی اور سیاسی زندگی کا لازمی جزو رہی ہے۔

ظریف نے کہا کہ سفاتکاری یقینا ایران کی بین الاقوامی موجودگی کا واحد مظہر نہیں تھی بلکہ ایران کی عالمی زندگی کا ایک ناقابل تردید حصہ ڈپلومیسی کی شکل میں پیدا ہوا تھا کیوںکہ سفارتکاری کو کبھی بھی زندگی سے دور نہیں کیا جاسکتا۔

انہوں نے بین الاقوامی سطح پر تعاون میں اضافے اور سلامتی اور طاقت کے فروغ کو سفاتکاری کے خصوصیات میں سے چند قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور ایشیائی ممالک کے تعلقات کی تاریخ کا مطالعہ انتہائی اہم ہے۔

ظریف نے کہا کہ ایران اور ایشیائی ملکوں کے درمیان تاریخی تعلقات پر زور اور اس طرح کی کانفرنس کا انعقاد صرف ماضی کا احترام کے مقصد سے نہیں بلکہ اب اور مستقبل میں تعمیری تعلقات کے حصول کیلئے ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha