فورگ قلعہ؛ ایران میں پرانی تاریخ کا منہ بولتا ثبوت

تہران، ارنا- ایرانی وزیر برائے ثقافت، سیاحت اور دستکاری صنعت نے کہا ہے کہ فورگ قلعہ صوبے جنوبی خراسان کے پرانے اور خوبصورت مقامات میں سے ایک ہے جس کا شمار ایران کے دس اہم تاریخی قلعوں میں ہوتا ہے۔

ان خیالات کا اظہار"علی اصغر مونسان" نے بدھ کے روز اپنے انسٹاگرام پیج میں جاری کردہ ایک پوسٹ میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ جنوبی خراسان میں ایک انتہائی خوبصورت تاریخی قلعہ ہے جو مقام اور تعمیراتی ڈھانچے کے لحاظ سے ایران کے سب سے منفرد تاریخی قلعوں میں سے ایک ہے۔ مونسان نے کہا کہ فورگ قلعے کا سنگ بنیاد نادر شاہ کے زمانے میں رکھا گیا ہے اور اس کا شمار ایران کے 10 اہم تاریخی قلعوں میں ہوتا ہے۔

فورگ قلعے کو 2000 میں قومی ثقافتی ورثے میں رجسٹر کیا گیا ہے؛ یہ قلعہ صوبے خراسان کے شہر بیرجند میں واقع علاقے درمیان کے فورگ نامی گاوں میں واقع ہے۔ فورگ کا تاریخی قلعہ پورگ کے ذریعہ 18 ٹاورز کے ساتھ ایک چٹان پر بنایا گیا ہے اور صدیوں بعد بھی ویسے ہی مضبوط ہے جیسا کہ پہلے تاکہ وقت گزرنے کیساتھ کوئی چیز اسے تباہ نہ کر سکے۔

اس قلعے کا مرکزی دروازہ مشرق کی طرف اور ایک چھوٹا دروازہ شمال کی طرف واقع ہے اور یہ تین حصوں پر مشتمل ہے؛ جس کا پہلا حصہ فوڈ گودام عملے کی رہائش گاہ اور مویشیوں کی رکھنے کی جگہ تھی۔

دوسرا حصہ فوجیوں اور محافظوں کی رہائش گاہ اور فوجی سامان کی ذخیرہ کرنے کی جگہ تھی اور محل کا تیسرا حصہ جو سب سے اہم حصہ ہے حکمران اور اس کے ساتھیوں کی رہائش گاہ تھی۔

اب تک، جنوبی خراسان میں 110 تاریخی قلعوں کی نشاندہی کی گئی ہے جن میں سے 22 درمیان شہر میں واقع ہیں اور یہ شہر جنوبی خراسان میں قدیم قلعوں کی سرزمین کے نام سے جانا جاتا ہے۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =