شمخانی کا داعش کیخلاف جنگ میں تہران اور کابل کے تعاون کی ضرورت پر زور

تہران، ارنا- اعلی ایرانی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ نے ایران اور کابل کے تعلقات کی توسیع کیلئے بنیادی ڈھانچوں کی فراہمی سمیت افغان حکومت کی حمایت اور داعش دہشتگرد گروہ کیخلاف مقابلہ کرنے میں باہمی تعاون پر زور دیا۔

ان خیالات کا اظہار ایڈمیرل "علی شمخانی" نے آج بروز منگل کو ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے افغان قومی سلامتی کے مشیر "حمد اللہ محب" کیساتھ اپنی حالیہ ملاقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس اجلاس کے دوران، علاقے سے امریکی انخلا اور ایران کی پالیسی میں افغانستان کی اہم پوزیشن پر زرو دیا گیا۔

شمخانی نے ایران اور کابل کے تعلقات کی توسیع پر بنیادی ڈھانچوں کی فراہمی سمیت افغان حکومت کی حمایت اور داعش دہشتگرد گروہ کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے تعاون پر زور دیا۔

واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ "محمد جواد ظریف" نے بھی آج افغان قومی سلامتی کے مشیر کیساتھ ملاقات کی۔

ظریف نے اس اجلاس کے دوران، افغانستان کی حمایت کو اسلامی جمہوریہ ایران کی بنیادی پالیسیوں میں سے ایک قرار دیتے ہوئے خطے سے امریکی انخلا کی ضرورت پر زور دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارا عقیدہ ہے کہ افغانستان میں قیام امن کا واحد حل افغان تمام گروہوں کے درمیان ایک ہمہ گیر مفاہمت سے حاصل ہوگا۔

اس موقع پر حمداللہ محب نے افغان امن عمل کی تازہ ترین تبدیلیوں کی وضاحت کرتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران کیجانب سے افغان حکومت اور عوام کی حمایت کا شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے خواف- ہرات ریلوے لائن کے نفاذ پر تبصرہ کرتےے ہوئے اسے علاقائی تعاون کے فروغ میں انتہایی اہم اور موثر قرار دے دیا۔

افغان قومی سلامتی کے مشیر نے تمام شعبوں میں اسلامی جمہوریہ ایران سے تعاون بڑھانے پر زور دیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 11 =