ایران غیر ملکی جامعات سے 466 مشترکہ منصوبوں پر کام کر رہا ہے

تہران، ارنا- ایرانی وزرات سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے آفس آف سپورٹ اینڈ ریسرچ کے ڈائریکٹر جنرل نے مستقبل قریب میں ایران اور اٹلی کی سائنسی ایسوسی ایشن کے قیام پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ انجمن تہران- روم سائنس اور ٹیکنالوجی نیٹ ورک کی تعریف کرے گی۔

ان خیالات کا اظہار "عبدالسادہ نیسی" نے آج بروز اتوار کو سائنسی شعبوں میں ایران اور اٹلی کے درمیان تعاون سے متعلق منعقدہ ایک اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں اٹلی سے تعلقات کے فروغ پر زور دیتا ہے۔

اس اجلاس میں شریک نائب ایرانی وزیر سائنس اور ٹیکنالوجی برائے بین الاقوامی امور "حسین سالار آملی" نے ایران اور دوسرے ملکوں کیساتھ مشترکہ سائنسی پیداوار میں ترقی پر تبصرہ کرتے ہوئے دنیا کے سائنسدانوں اور محققین سے سائنسی تعلقات میں اضافے کو وزرات سائنس اور ٹیکنالوجی کی اہم پالیسیوں میں سے ایک قرار دے دیا۔

انہوں نے بین الاقوامی سطح پر ایرانی جامعات کی کارکردگی کا ذکرکرتے ہوئے کہا کہ ایران یو نیورسٹیوں نے گزشتہ 6 سالوں کے دوران، قابل قدر ترقی کی ہے۔

آملی نے اسلامی جمہوریہ ایران اور غیر ملکی جامعات کے درمیان 446 مشترکہ منصوبوں کا ذکر کرتے ہوئے سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں بین الاقوامی تعلقات کی توسیع پر زور دیا۔

واضح رہے کہ ایرانی وزرات سائنس اور ٹیکنالوجی نے حالیہ دنوں کے دوران، تہران میں  قائم برطانوی سفارتخانے میں تعینات اٹلی کے ثقافتی قونصلر "یاروسلاا رومانوا" سے ایک اجلاس کے دوران ایران اور اٹلی کی جامعات کے درمیان تعاون بڑھانے پر زور دیا تھا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha