انسٹیکس کو اپنی کارکردگی ثابت کرنا ہوگی

نیویارک، ارنا - اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل نمائندے نے یورپی باشندوں کی جانب سے انسٹیکس مکانیزم کی تاثیر کو ثابت کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے  کہا کہ ایران کو جوہری معاہدے کے معاشی فوائد سے لطف اندوز ہونا چاہئے۔

یہ بات مجید تخت روانچی نے اقوام متحدہ میں جنوبی افریقہ کے نمائندے جری ماتجیلا اور سلامتی کونسل کے عبوری چیئرمین انٹونیو گوٹیرس کو لکھے گئے ایک خط میں قرارداد 2231 میں ایران کے حوالے سے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کی 10 ویں رپورٹ کی وضاحت کرتےہوئے کہی۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کے تحت جو 2015 میں ایران جوہری معاہدے کے بعد منظور کی گئی تھی، اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل کا فرض ہے کہ وہ ہر چھ ماہ بعد اس قرارداد کے نفاذ سے سلامتی کونسل کو ایک رپورٹ پیش کرے۔

اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل نمائندے نے کہا کہ واشنگٹن ایٹمی معاہدے کی سراسر خلاف ورزی کر رہا ہے اور ایران کی جوہری ذمہ داریوں میں کمی کو اس معاہدے پر دوسرے فریقوں کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

انہوں نے ایران کے ساتھ جوہری معاہدے کے تحت معاشی تعلقات کے تسلسل اور انسٹیکس نظام کے قیام کو یقینی بنانے کے لیے یورپین ممالک کے وعدے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یہ میکانزم کو 2 سال کے بعد اپنی کارکردگی کو ثابت کرنا ہوگا۔

انہوں نے شہید فخری زادہ اور شہید سلیمانی کے قتل کا حوالہ دیتےہوئے کہا کہ ایسے دہشتگردانہ اقدامات کو واضح طور پر مذمت کی جانی چاہیے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha