14 دسمبر، 2020 11:51 AM
Journalist ID: 2393
News Code: 84146531
0 Persons
پندرہ ایرانی شہری امریکی ہاتھوں کے یرغمال ہیں

تہران، ارنا – ایرانی عدلیہ کے نائب سربراہ برائے قانونی اور بین الاقوامی امور نے کہا ہے کہ 15 ایرانی شہری پابندیوں کو بائی پاس کرنے کے الزام پر امریکی ہاتھوں کے یرغمال ہیں۔

 یہ بات علی باقری نے پیر کے روز آج 'جام جم' اخبار کے ساتھ ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔
انہوں نے بتایا کہ امریکہ نے 15 ایرانیوں کو پابندیوں کو بائی پاس کرنے کے الزام میں اغوا کرلیا ہے۔ 

انہوں نے کہا کہ امریکہ ایرانیوں کو جھوٹے بہانوں کے تحت یرغمال بناکر ایرانی جیلوں میں زیر قید امریکی مجرموں کے ساتھ تبادلہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے جو یہ ایک واضح یرغمال ہے۔

ایرانی عہدیدار نے کینیڈا میں مقیم ایرانیوں کے حقوق کی خلاف ورزی پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کینیڈا اس حقیقت کے باوجود کہ اس ملک میں تقریبا 500 ہزار ایرانی رہتے ہیں، سیاسی وجوہ کی بنا پر ایرانیوں کی قونصلر خدمات کی فراہمی کے لیے اس ملک میں ایک دفتر کے قیام کی اجازت نہیں دیتا ہے۔

اسی وجہ سے کینیڈا میں مقیم ایرانیوں کو ایسی قونصلر خدمات حاصل کرنے کے لئے کسی دوسرے ملک میں جانا چاہیے۔ اس وقت بدقسمتی سے انسانی حقوق پامال کرنے والے ان ممالک، یا دوسرے لفظوں میں انسانوں کا قاتل ممالک ، انسانی حقوق کے محافظ بن گئے ہیں۔

انہوں نے ایران کے خلاف امریکی پابندیوں سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے بارے میں کہا کہ اگرچہ امریکہ نے پابندیاں عائد کردی ہیں، لیکن یورپی ممالک ان کو نافذ کررہے ہیں، جو ایسا نقطہ نظر ان کے امن پسند مواقف کے ساتھ مطابقت نہیں رکھتا ہے۔

انہوں نے شہید سلیمانی کے قتل کے کیس کے جائزے کے بارے میں کہا کہ جرمن سفیر سے ملاقات کے دوران یہ بتایا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران توقع کرتا ہے کہ جرمن حکومت ایرانی عدلیہ کے ساتھ جنرل سلیمانی کے قتل کے معاملے کو مکمل کرنے اور اس کے ابہام کو دور کرنے میں تعاون کرے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 13 =