سب فریقین کو جوہری معاہدے پر واپس آنا ہوگا: آسٹرین وزیر خارجہ

لندن، ارنا – آسٹرین وزیر خارجہ نے امریکی منتخب صدر کے جوہری معاہدے پر واپسی کے فیصلے کو حوصلہ افزا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ویانا فریقین کے درمیان مذاکرات کی سہولیات کی فراہمی کے لئے بھرپور کوشش کرے گا اور تمام فریقین کو اس معاہدے جو چند فریقی پن کے لئے مثالی ماڈل ہے، پر واپس آنا ہوگا۔

یہ بات "الکساندر شالنبرگ" نے ہفتہ کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ویانا جوہری معاہدے پر قائم ہے اور اس معاہدے کے تمام اراکین کی سفارتکاری حل کی تلاش کے لئے کوششوں کی حمایت کرے گا۔
شالنبرگ نے 16 دسمبر کو کرونا کی پابندیوں کے باوجود جوہری معاہدے کے مشترکہ کمیشن کی نشست کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ نشست اراکین کے درمیان مواصلات کے راستے کو کھلا رکھنے کے لئے اہم اقدام ہے۔
انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ دو طرفہ تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس ملک کے ساتھ 160 سالہ مستحکم اور دوستانہ تعلقات پر فخر کرتے ہیں اور یقینا اس تعلقات کو جاری رکھیں گے۔
آسٹرین وزیر خارجہ نے کہا کہ ہم نے مارچ میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے موقع پر اسلامی جمہوریہ ایران کا دورہ کرتے ہوئے اس ملک کے عوام کی مہمان نوازی کا لطف اٹھایا اور ایران کے صدر اور وزیر خارجہ سے تعمیری بات چیت کی۔
انہوں نے ایک بار اسلامی جمہوریہ ایران کا دورہ، تاريخی اور سیاحتی مقامات کو دیکھنے پر دلچسبی کا اظہار کیا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 2 =