تجزیہ فراہم کرنا جوہری معاہدے کے تحت ایجنسی کو تفویض کردہ مشن سے باہر ہے: ایران

لندن، ارنا – ویانا میں بین الاقوامی تنظیموں میں ایرانی مستقل مندوب نے جوہری معاہدے پر عالمی ایٹمی ادارے کے سربراہ "رافائل گروسی" کے نئے بیانات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسی بھی تشخیص یا تجزیے کی فراہمی جوہری معاہدے کے تحت ایجنسی کو تفویض کردہ مشن سے باہر ہے۔

یہ بات "کاظم غریب آبادی" نے جمعہ کے روز اپنے ٹوئٹر پیج میں کہی۔
انہوں نے کہا کہ ایجنسی کا واحد کردار ایٹمی سے متعلق اقدامات کی نگرانی ، توثیق اور تصدیق کرنا اور تازہ ترین رپورٹس فراہم کرنا ہے۔
اس سے قبل رافائل گروسی نے اسکائی نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایران کو یورینیم کی افزودگی بڑھانے اور انسپکٹرز تک رسائی سے انکار کے اپنے اقدامات پر عمل نہیں کرنا چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ اگر ان اقدامات پر عمل درآمد کرے تو وہ ان وعدوں سے اور بھی زیادہ انحراف کریں گے جو ایران نے معاہدے میں شامل ہونے پر خود سے اٹھائے تھے۔
گروسی نے کہا کہ میں تصور بھی نہیں کرسکتا کہ اگر ایسی صورتحال سے آئی اے ای اے کے انسپکٹرز کی کسی قسم کی پابندی عائد ہوتی تو اس سے کون فائدہ اٹھائے گا ، جس کے نتیجے میں یہ یا اس صورتحال سے ان کے کام میں کمی آئے گی۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha