صوبہ سیستان و بلوچستان نان آئل کی برآمدات کا نیا مرکز ہے

زاہدان، ارنا - سیستان و بلوچستان نے افغانستان، پاکستان اور بحر ہند کے ممالک کی منڈیوں میں غیر تیل مصنوعات کی برآمد کرکے ملک کے لئے ایک بہت بڑا موقع فراہم کیا ہے اور غیر تیل برآمدات کا ایک نیا مرکز بن گیا ہے۔

افغانستان اور پاکستان  کے ممالک میں صوبہ سیستان و بلوچستان کے سامان منتقلی کی تیز رفتار کے امکان کے سبب ان ممالک میں ایرانی غیر تیل برآمدات کو وسعت دینے کی منصوبہ بندی کا نقطہ آغاز ثابت ہوسکتے ہیں۔

سیستان بلوچستان کی صنعت ، کان کنی اور تجارتی تنظیم کے نائب سربراہ برا‏‏ئے تجارت محمدرفیع سلطان زادہ نے اس سال کے پہلے چھ ماہ میں اس صوبے کے کسٹمز اور بارڈر مارکیٹوں کے ذریعے پاکستان کو کی جانے والی کل برآمدات کی شرح 413 ملین 499 ہزار 196 ڈالر تھی جو 1385 کی اسی مدت کے مقابلے میں 85 فیصد اضافہ ہے۔

سلطان زادہ نے کہا کہ رواں سال کے پہلے چھ مہینے کے دوران اس صوبے کی بارڈر مارکیٹوں اور کسٹم سے کل برآمدات کی شرح  507 ملین 249 ہزار 589 ڈالر تھی جس میں گذشتہ سال کے اسی عرصے کے مقابلہ میں 132 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مذکورہ مدت کے دوران افغانستان کو سیستان اور بلوچیستان کے کسٹمز کے ذریعے برآمدات 291 ملین 304 ہزار 153 ڈالر تھیں اور اس ملک کو مارکیٹوں کے ذریعے برآمدات کی شرح بھی 215 ملین 945 ہزار 436 ڈالر تھی۔

 ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 12 =