پابندیوں کے باوجود ترقیاتی منصوبوں کا پوری طاقت سے نفاذ ہوتے جا رہے ہیں: ایرانی صدر

تہران، ارنا- ایرانی صدر مملکت نے تین صوبوں میں بجلی کے شعبے میں 25 منصوبوں کی افتتاحی تقریب میں کہا ہے کہ ملک کیخلاف عائد پابندیوں کے باوجود ترقیاتی منصوبوں کا تیزی سے نفاذ ہوتے جار ہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" نے آج بروز جمعرات کو خوزستان، سیستان و بلوچستان اور خراسان رضوی کے صوبوں میں بجلی کے شعبے میں 25 منصوبوں کی افتتاحی تقریب کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مہینے میں 35 گاؤں، بجلی نٹ ورک سے منسلک ہوجاتے ہیں اور موجودہ حکومت کے دوران، گاؤں علاقوں میں تمام شعبوں میں نئی تبدیلیاں پیدا ہوگئی ہیں؛ ملک میں موجود 20 گھرانے پر مشتمل گاؤں کی بجلی خدمات تک رسائی حاصل ہوئی ہے اور 10 گھرانے پر مشتمل دیگر گاؤں کو بھی رواں سال کے اختتام تک بجلی خدمات کی فراہمی ہوگی۔

صدر روحانی نے ملک کیخلاف شدید معاشی جنگ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایران کیخلاف مسلط کردہ آٹھ سالہ جنگ سے کہیں زیادہ بُری ہے۔

انہوں نے کہا کہ نہ صرف امریکہ بلکہ کوئی بھی یہ تصور نہیں کرسکتا کہ ہم اس شدید سیاسی اور معاشی جنگ کیخلاف بخوبی مزاحمت کرسکیں اور ملک کا اچھی طرح سے انتظام کریں۔

صدر روحانی نے کہا کہ اگر چہ پابندیوں کی وجہ سے عوام کو انتہائی معاشی مسائل کا سامنا ہوا لیکن لوگوں کو کبھی بھی پانی، بجلی اور گیس کی کٹوتی یا پٹرول، ڈیزل یا گندم کی قلت کا سامنا نہیں کرنا پڑا اور ان دنوں کے دوران ملک میں صحت، شہری ترقی، ریلوے اور دیگر بہت سے شعبوں میں زبردست تبدیلیاں رونما ہوئیں۔

انہوں نے کہا کہ 2018 سے ملک کیخلاف شدید پابندیاں عائد ہوئی لیکن ہم نے ایک سال گزرنے کے بعد صورتحال پر قابو پایا اور 2019 کے دوران ملک کی معاشی ترقی میں اضافہ ہوا تا ہم بد قسمتی سے 2019 کے اختتام میں ہمیں کورونا وائرس کی وجہ سے معاشی مشکلات کا سامنا ہوا؛ اگرچہ کورونا وبا نے ترقی یافتہ مغربی ملکوں پر بھی بہت نقصانات پہنچایا تا ہم، ایران نے پابندیوں کے باوجود کورونا کیخلاف مقابلہ کرنے میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

منعقدہ تقریب میں شریک ایرانی وزیر توانائی "رضا اردکانیان" نے کہا ہے کہ نفاذ کیے گئے منصوبوں پر 6 ہزار ارب تومان (ایرانی قومی کرنسی) سے زیادہ سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان بجلی گھروں کے نفاذ سے ملک کے بجلی گھروں کی مجموعی صلاحیت میں 20 ہزار میگا واٹ اضافہ ہوگا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 6 =