چابہار غیر ملکی آپریٹرز کو راغب کرنے والی پہلی ایرانی بندرگاہ ہے

چابہار، ارنا – ایرانی صوبے سیستان و بلوچستان کی بندرگاہوں اور میری ٹائم نیوی گیشن کے جنرل ڈائریکٹر نے کہا ہے کہ چابہار غیر ملکی آپریٹرز کو راغب کرنے والی پہلی ایرانی بندرگاہ ہے جو بہارت کے ساتھ تعاون کرنے اور اس بندرگاہ کا عمل سنبھالنے میں کامیاب رہی ہے۔

یہ بات "بہروز آقايی" نے پیر کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ چابہار کی شہید بہشتی بندرگاہ کے پہلے مرحلے کی تکمیل کے بعد مارکیٹنگ کا سب سے اہم کام سرمایہ کاروں کو راغب کرنا اور مختلف جہاز لانا ہے ، جو 2019 اور 2020 میں اس جنرل آفس کی ترجیحات میں شامل رہا ہے۔
آقایی نے کہا کہ مواصلات کے سلسلے میں چابہار بندرگاہ کی خدمت کے لئے ایک بھارتی طویل مدتی آپریٹر (10 سال) کے ساتھ ایک معاہدہ طے پایا گیا ہے، بھارتی آپریٹر 85 ملین ڈالر مالیت کا سامان لائے گا اور اس مدت کے اختتام کے بعد ، اس کی ملکیت ایران منتقل ہوجائے گی۔
انہوں نے مزید کہا کہ چابہار بندرگاہ خطی ممالک خاص طور پر افغانستان اور وسطی ایشیاء تک پہنچنے کے لئے ایک اہم اور کم لاگت راستہ ہے اور اس میں اتارنے اور لوڈنگ کے لئے بنیادی ڈھانچہ اور اسٹریٹجک سامان موجود ہے جس کی مالیت سالانہ 15 ملین ٹن ہے۔
انہوں نے چابہار فری زون میں سرمایہ کاری کے بڑھتے ہوئے مطالبات کا حوالہ دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ سرمایہ کاروں کو خطے کے فوائد اور مراعات کے ساتھ ساتھ سامان کی ترسیل میں اس کی بڑی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھانا چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ بندرگاہ کو اتارنے اور لوڈ کرنے کا سالانہ حجم اس کے پہلے مرحلے میں 15 ملین ٹن ہے اور اس سے بڑے جہاز بین البراعظمی وصول ہوسکتے ہیں۔
ایرانی صوبے سیستان و بلوچستان کی بندرگاہوں اور میری ٹائم نیوی گیشن کے جنرل ڈائریکٹر نے کہا کہ شہدی بہشتی کی بندرگاہ ، آئل اینڈ پیٹروکیمیکل اسٹیشن کے قیام ، تجارتی اور تفریحی مراکز کی تعمیر ، بحری جہاز ، گندم ، پائپ لائنری صنعتوں کے لئے فیکٹری کے دوسرے مرحلے کے ترقیاتی منصوبے کے معاہدے طے پا گئے ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

  • چابہار؛ عالمی  بندرگاہ

    چابہار؛ عالمی بندرگاہ

    چابہار، ارنا – چابہار بندرگاہ اسٹریٹجک مقام اور آزاد پانیوں تک رسائی کی وجہ سے تجارت اور ٹرانزٹ…

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 8 =