پاک ایران تعلقات کے فروغ میں علامہ اقبال کی سوچ کا کردار

اسلام آباد، ارنا- لاہور میں "ایران اورپاکستان کے روابط میں علامہ اقبال کا کردار" کے عنوان کے تحت ایک سمینار کا انعقاد کیا گیا جس میں پاکستانی اساتذہ اور ماہرین سمیت لاہور میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے قونصول جنرل نے بھی حصہ لیا تھا۔

منعقدہ اس اجلاس میں حصہ لینے والوں نے اقبال کی بصیرت اور افکار کو دونوں ہمسایہ ممالک کے مابین تعلقات کی مضبوطی کیلئے ایک الہامی ذریعہ قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اس سینمار کا آج بروز منگل کو لاہور میں واقع پنجاب یورنیورسٹی کی میزبانی میں انعقاد کیا گیا۔

ایرانی قونصول جنرل "محمد رضا ناظری"، وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی صدرڈاکٹر "نیاز احمد اختر" اور اس یونیورسٹی کے دیگر اساتذہ سمیت متعدد ماہرین نے اس سمینار میں حصہ لیا تھا۔

ناظری نے اس اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان، تہذیبی، مذہبی اور قومی مشترکات سمیت پڑوسی ہونے کی وجہ سے باہمی تعلقات کو بڑھانے کی اچھی صلاحیت رکھتے ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ پچھلے 70 سالوں کے دوران، دونوں ہمسایہ ممالک کے مابین دوستانہ تعلقات پاکستانی شاعر اور فیلسوف علامہ محمد اقبال جیسے بااثر شخصیات کی کاوشوں کے مرہون منت ہیں۔

ناظری نے کہا کہ علامہ اقبال نے ایران اور پاکستان کے ثقافتی تعلقات کو مستحکم کرنے میں پُل کا کردار ادا کیا۔

انہوں نے علامہ اقبال سے متعلق قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای کے بیانات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی سپریم لیڈر نے اقبال جیسے عظیم شخصیت سے متعلق کہا کہ اقبال کی نظموں کو زندہ رکھیں؛ کیونکہ اقبال کی بہترین تعریف ان کی شاعری ہے اور کوئی اظہار خیال ہی اقبال کو متعارف نہیں کرسکتا ہے۔

انہوں نے مزید فرمایا کہ اردو زبان اور ادب کے ماہرین کا کہنا کہ اقبال کی اردو شاعری بہترین ہے؛ البتہ یہ شاید اقبال کی تعریف میں بہت کم ہو۔۔۔لیکن اقبال کی فارسی شاعری، شاعری کے معجزات میں سے ایک ہے۔

ناظری نے مزید کہا کہ علامہ اقبال لاہوری اسلامی دنیا میں اتحاد کے داعی تھے؛ اب ہمیں پہلے سے کہیں زیادہ اتحاد کی ضرورت ہوتی ہے جس کا دنیائے اسلام اور علاقے کے مسلم عوام سمیت ایران اور پاکستان کی دو اقوام کے دلوں کو جوڑنے کیلئے انتہائی اہم کردار ہے۔

منعقدہ اس سمینار میں شریک بعض اساتذہ اور ماہرین نے بھی پاک ایران تعلقات کی توسیع میں علامہ اقبال کے کردار پر تبصرہ کرتے ہوئے دونوں ملکوں کی ثقافتی اور سائنسی برادری کے رابطہ بڑھانے پر زور دیا۔

**9467

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha