پاکستان کا ایران کیساتھ مذہبی سیاحت کے شعبے میں تعاون کیلئے پر عزم

اسلام آباد، ارنا – پاکستانی وزیر مذہبی امور نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ہم پاکستانی شہریوں کو زیارت کے لئے ایران جانے اور سیاحت کے شعبے کو فروغ دینے کے مقصد سے اس ملک کے ساتھ باہمی تعاون کے معاہدے پر دستخط کرنے کے خواہاں ہیں۔

یہ بات "پیر نورالحق قادری" نے جمعرات کے روز پاکستانی وزارت مذہبی امور کی عمارت میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
اس اجلاس کا مقصد مذہبی سیاحت کے شعبے میں پاکستان کی پالیسی کے ایک جامع منصوبے کو منظوری دینا تھا جس کے دوران پاکستانی شہریوں کے ایران جانے اور اس سلسلے میں عمل درآمد کے قوانین پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان اپنے شہریوں کی اسلامی جمہوریہ ایران اور عراق جانے کی سہولت کے لئے ایک جامع پالیسی نافذ کرے گا ، جس سے علاقے میں مذہبی سیاحت کو بھی تقویت ملے گی۔
قادری نے ایران میں زمینی سفر کی ترجیح پر زور دیا اور کہا کہ ایران کو مقدس مقامات کی زیارت کے لئے پاکستانی گروہوں کو منظم کرنا اور بھیجنا انھیں حج کی تقریبات میں بھیجنے کے طریقہ کار پر مبنی ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ تفتان بارڈر کراسنگ ، زائرین کے ایران آنے کے لئے مرکزی راستہ ہے جس کے لئے پاکستانی حکومت وہاں رہائش اور صحت کی سہولیات فراہم کرے گی۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ تفتان بارڈر پر ضروری انفراسٹرکچر مہیا کیا جائے گا ، اور پاک ایران سرحد تک جانے والی سڑکوں کو جدید بنانا بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔
قابل ذکر بات یہ ہے کہ سالانہ 120 ہزار پاکستانی مذہبی ، سیاحتی اور ثقافتی مقامات کی زیارت کے لئے ایران ، عراق اور شام جاتے ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

متعلقہ خبریں

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 10 =